MeaningIn.com
   
   

آتی ہے ہاتھی کے پیر اور جاتی ہے چیونٹی کے پیرجیسے کسی بیماری کا وقت جو آتا تو ایکدم ہے لیکن جاتا دیر سے ہےجیسے مشکل وقتیا کوئی تکلیف Idioms

آتی ہے ہاتھی کے پیر اور جاتی ہے چیونٹی کے پیرجیسے کسی بیماری کا وقت جو آتا تو ایکدم ہے لیکن جاتا دیر سے ہےجیسے مشکل وقتیا کوئی تکلیف in English means;

آتی ہے ہاتھی کے پیر اور جاتی ہے چیونٹی کے پیر جیسے کسی بیماری کا وقت جو آتا تو ایکدم ہے لیکن جاتا دیر سے ہے جیسے مشکل وقت یا کوئی تکلیف آتی ہے ہاتھی کے پیر اور جاتی ہے چیونٹی کے پیر جیسے کسی بیماری کا وقت جو آتا تو ایک دم ہے لیکن جاتا دیر سے ہے جیسے مشکل وقت یا کوئی تکلیف مصیبت آتی تو ہاتھی کی چال ہے لیکن جاتی چیونٹی کی چال ہے مصیبت آتی ہے ہاتھی کی چال جاتی ہے ہے چیونٹی کی چال ہاتھی کے پیر میں سب کے پیر ذرا سی چیونٹی ہاتھی کی جان لیتی ہے دولت حاصِل کرتے وقت تکلیف ہوتی ہے رکھتے وقت فِکر و تفکر ہوتا ہے اور جاتے وقت غم اور دکھ روگ آتا گھوڑے کی چال ہے جاتا چیونٹی کی چال ہے ایجاد ہوتے ہی کوئی چیز بہترین نہیں بن جاتی خواہ کوئی چیز ہو مکمل ہوتے دیر لگتی ہے بچے تکلیف تو سب دیتے ہیں لیکن آرام کوئی کوئی جتنی جلدی بیماری آتی ہے اتنی جلدی علاج نہیں ہو سکتا ہاتھی کے دانت کھانے کے اور دکھانے کے اور بعض اوقات خفیف تکلیف بڑے دُکھ سے زیادہ تکلیف دہ ثابت ہوتی ہے تھوڑی تکلیف میں آنسو بڑی تکلیف میں سخت دِلی دماغی تکلیف جِسمانی تکلیف سے بُری ہے دوسرے کی تکلیف کو وہی محسوس کر سکتا ہے جو تکلیف اُٹھا چکا ہو جب موت قریب آتی ہے تب ہمیں ہوش آتا ہے ہاتھ کا دیا ہی کام آتا ہے نیکی کبھی نہ کبھی کام آتی ہے وقت گزر جاتا ہے بات رہ جاتی ہے ہمیشہ کوئی بیوقوف نہیں رہتا لیکن کبھی کبھی سب سے بیوقوفی ہو ہی جاتی ہے دُنیا میں انقلاب آتے دیر نہیں لگتی پل جھپکنے کی دیر ہے شیطان کا نام لینے کی دیر ہے جھٹ آتا ہے آتا مُشکل سے ہے جاتے دیر نہیں لگتی اکثر اوقات زندگی میں یہ غلطی کی جاتی ہے کہ بڑی بڑی خوشیاں تلاش کی جاتی ہیں اور وہ ملتی نہیں دراصل چھوٹی چھوٹی خوشیاں کل زندگی کو خوش رنگ بنانے کے لیے کافی ہو سکتی ہیں بشرطیکہ انسان کو اس راز سے واقفیت ہو اکثر اوقات زندگی میں یہ غلطی کی جاتی ہے کہ بڑی بڑی خوشیاں تلاش کی جاتی ہیں اور وہ ملتی نہیں دراصل چھوٹی چھوٹی خوشیاں کل زندگی کو خوش رنگ بنانے ننگے پیر آگ پر نہیں چلا جاتا کام میں جتنی جلدی کرو اتنی ہی دیر لگ جاتی ہے آدمی آدمی میں انتر کوئی ہیرا کوئی کنکر ہر شخص کے اپنے اعمال ہوتے ہیں جن سے اسکی پہچان ہوتی ہے اگر کوئی کام چور ہے تو اسکی اپنی پہچان ہے اگر کوئی محنتی ہے تو اسکی اپنی ایک اہمیت ہے آتا ہے پھل تو جاتی ہے جھک شاخِ ثمرور کہنے کو تو دوست بہت لیکن وقت پڑے کوئی نہیں چیونٹی کے لیے چپنی ہی دریا دیر شوق بڑھاتی ہے لیکن بعض اوقات بُجھاتی بھی ہے مصیبت اور بیماری کس پر نہیں پڑتی بد قسمتی آتی ہے تو آدمی کو تاہ اندیش ہو جاتا ہے کتے بھونکتے رہتے ہیں ہاتھی نکل جاتے ہیں مُصیبت ان پر ضرور آتی ہے جو اس کو ہر وقت بلاتے رہتے ہیں قرض جلد ہی باعث تکلیف بن جاتا ہے کوئی بری بات نہ سمجھنا کوئی ہچکچاہٹ یا مشکل نہ ہونا شہرت عموماً بغیر قابلیت کے حاصِل ہوتی ہے اور بغیر کسی خطا کے ضائع ہو جاتی ہے انسان کی عیب جوئی تو ہر کوئی کرتا ہے لیکن سنوارنے کی کوشش کوئی نہیں کرتا اچھا مذاق کسی کسی میں پایا جاتا ہے دیر کرنے سے اکثر موقع ہاتھ سے نکل جاتا ہے زیادہ دیر کرنے سے کام بِگڑ جاتا ہے وقت گُزرتے دیر نہیں لگتی وقت گزرتے دیر نہیں لگتی پیاسا کنویں کے پاس جاتا ہے کنواں پیاسے کے پاس نہیں آتا محبت یا کسی تکلیف سے متاثر ہر سودا ٹھیک طریقہ سے کرو تاکہ بعد میں کسی کو بھی تکلیف نہ ہو گیا وقت پھر ہاتھ آتا نہیں گیا وقت پھر ہاتھ نہیں آتا کاہل کے کام کرنے کا وقت کبھی نہیں آتا جو شے مشکل سے ہاتھ آۓ احتیاط سے رکھی جاتی ہے مفلسی کے سواۓ کوئی چیز تکلیف اُٹھاۓ بغیر حاصِل نہیں ہو سکتی کسی کے ساتھ دیر تک دشمنی مت رکھو بہادر اور وفادار انسان کے لئے کوئی بھی کام مشکل نہیں ایک ہی شخص ہمیشہ کسی چیز کا مالک نہیں رہتا ایک کے بعد دوسرا جانشین اس طرح آتا ہے جیسے لہر پر دوسری دُنیا میں کوئی چیز نئی نہیں نہ کسی بات میں حقیقی سچائی ہے نہ کسی چیز کو وقعت حاصِل ہے اینٹیں بنانا آسان ہے لیکن مکان تعمیر کرنا مشکل جھگڑے میں شامل ہونا آسان ہے لیکن نکلنا مشکل علم یا عقل کوئی ماں کے پیٹ سے لے کر نہیں آتا جیسی بیماری ویسی دواء بیماری عیش و عشرت کا سود ہے بیماری کی نسبت خوف زیادہ مہلک ہے بیماری کے خاتمہ پر جو طبیب بُلایا جاۓ اسے زحمت نہیں اُٹھانی پڑتی تندرستی کی قدر بیماری میں ہوتی ہے بیماری میں انسان کا دِل اپنے ہی خیالات پر غور کرتا رہتا ہے بیماری کی تشخیص ہو جانا آدھی شفا ہے بیماری کا علاج شروع میں ہی کرنا چاہیئے بیکاری بدتر از بیماری جہاں طبیب زیادہ وہاں بیماری زیادہ پیشے سے متعلق بیماری بڑھاپا بذاتِ خود ایک بیماری ہے غمگینی سے بیماری بھلی شہرت خطرناک چیز ہے اچھی سے حاسد پیدا ہوتے ہیں اور بُری سے خود کو شرم آتی ہے اپنی عقل اور پرائی دولت سب کو بہت نظر آتی ہے مُسرت صرف عقلمند اور نیک کے حِصّے آتی ہے بوڑھے موت کے پاس جاتے ہیں اور موت جوانوں کے پاس آتی ہے وقت ریل گاڑی اور جوار بھاٹا کسی کا بھی انتظار نہیں کرتے کسی کو لاجواب کرنا اور بات ہے اور اس کو قائل کرنا اور بات ذرا سی تکلیف کے لئے حکیم کے پاس ذرا سے جھگڑے کے لئے وکیل کے پاس اور ذرا سی پیاس کے لیے گھڑے کی طرف نہیں دوڑنا چاہیئے تکلیف جھیلے بغیر دانائی اور مشقت کئے بغیر دولت حاصل نہیں ہوتی صبر روپیہ اور وقت کے آگے کوئی بات نا ممکن نہیں جب کسی کے بُرے دن آتے ہیں پہلے اس کی عقل جاتی رہتی ہے ہاتھ پیر ہلاوٴ تو خدا بھلا کرے گا نہ سر نہ پیر بغیر ہاتھ پیر پھیلاۓ کچھ نہیں ہوتا ڈنڈا سب کا پیر افواہ بے سر پیر ہوتی ہے جِس پر پڑے وہی جانے جِس کے پیر نہ پھٹی بوائی وہ کیا جانے پیٹر پرائی جِس کے پیر نہ پھٹی بوائی وہ کیا جانے پیڑ پرائی نہ سر نہ پیر۔ بے سروپا جِس کے پیر نہ پھٹی بوائی۔ وہ کیا جانے پیٹر پرائی بیکاری کا وقت گُزارنا مشکل مشکل وقت گہرا گھاوٴ بھر جاتا ہے لیکن بدنامی دور نہیں ہوتی جوش و خروش صرف عقلمندوں کے ہاتھوں میں ہی کارآمد ہو سکتا ہے لیکن یہ پایا عموماً بیوقوں میں ہی جاتا ہے بیٹے کی شادی جب چاہے کرو لیکن بیٹی کی شادی جِس وقت کر سکتے ہو تاخیر نہ کرو بیوفا بیوی اور دُشمن پر جو کچھ خرچ کیا جاۓ اسے ضائع ہوا سمجھو لیکن دوست اور ساتھی پر خرچ کیا ہوا پیسہ باعث نفع ہوتا ہے مرد آگ ہے اور عورت گویا پھوس شیطان کے آنے کی دیر ہے کہ آگ لگی کوئی بات ایک بار کئے جانے سے رسم نہیں ہو جاتی بیل سینگوں سے اور انسان زبان بندی سے قابو میں آتا ہے محبت کو کبھی بُرا نظر نہیں آتا اور حسد کو کچھ بھی اچھا نہیں لگتا انسان زُبان سے قابو میں آتا ہے اور گاۓ سینگوں سے جب دل کہیں اور ہو تو آنکھوں کو کچھ نظر نہیں آتا جو صرف نقائص کی تلاش میں رہے اس کے اور کچھ ہاتھ نہیں آتا کسی کیلئے مشکل پیدا کرنا چھوٹوں کو قصور کی سزا ملتی ہے لیکن بڑوں پر کسی کا بس نہیں چلتا مُصیبت تو بہت سے سہار لیتے ہیں لیکن حقارت کسی سے برداشت نہیں ہوتی کسی بھی شخص کو کام کرنے کی ترغیب دی جا سکتی ہے لیکن اسے مجبور نہیں کیا جا سکتا رنج جان سے نہیں مارتا لیکن کسی کام کا نہیں چھوڑتا دوسرے کے راز جاننے کی کوشش نہ کرو لیکن اگر تمہیں کسی نے رازدان بنا لیا ہے تو اس کا راز اپنے تک رکھو وقت پر چھوٹا آدمی بھی بڑا کام کر جاتا ہے وقت پر سب کچھ معلوم ہو جاتا ہے وقت یونہی گزر جاتا ہے صبح ہوتی ہے شام ہوتی زندگی یونہی تمام ہوتی ہے مذہب سے بڑھ کر دُنیا میں کوئی محافظ نہیں اور نہ ہی اس سے بُرا کوئی دھوکہ دنیا ایک زینہ ہے جِس پر کوئی چڑھ رہا ہے اور کوئی اُتر رہا ہے موقع سے فائدہ اُٹھا لو اسی وقت کیونکہ پھر وقت گزر جاۓ گا جو لوگ اپنے وقت سے پورا فائدہ اٹھاتے ہیں ان کے پاس فالتو وقت نہیں ہوتا وقت کا کیا وقت ہی مٹاتا ہے وقت مطلوب برائے حصول نقل وقت جو نقل حاصل کرنے کے لئے ہوا ہو میعاد سے منہا ہوتا ہے جو شخص غُصہ ور ہو اس سے پرہیز کرنا ہی بہتر ہے لیکن جو شخص زبان پر قفل لگاۓ رکھے اس کا ہر گز اعتبار نہ کرنا نہ ہی کوئی واسطہ رکھنا مذاق کو ایک بار تو شاید کوئی برداشت کر لے لیکن دوبارہ نہیں قدرت نے ہم کو زندگی روپیہ کی طرح مفاد پر دی ہوئی ہے لیکن اس کی واپسی کا کوئی دن مقرر نہیں بڑھاپے سے اگرچہ سب کو نفرت ہے لیکن جوان مرنا بھی کوئی نہیں چاہتا غریبی کوئی جرم نہیں لیکن جرم سے بڑھ کر ہے بہت باتیں سوچنے میں کوئی حرج نہیں لیکن ہاتھ ایک پر ہی ڈالو غُصہ اور جلدی میں اچھی نصیحت نہیں سنی جاتی زندگی گزر جاتی ہے اور یہ پتہ نہیں چلتا کہ اس کا راز کیا ہے عشق اور تجارت میں فصاحت خودبخود آ جاتی ہے بدصورت عورتیں اچھے کپڑے پہن کر اور بدصورت و بد نما ہو جاتی ہیں بُھوکے کو دُور سے خُوشبو آتی ہے زِندہ دِل پر مُصیبت شاذ و نادر ہی آتی ہے زندگی دوبارہ نہیں آتی مُصیبت کبھی تنہا نہیں آتی مُصیبت کِس پر نہیں آتی ٹھوکر کھا کر عقل آتی ہے جو شخص محتاط رہتا ہے اِس پر مصیبت نہیں آتی جِس کو غربت سے شرم آتی ہے اس کے لئے دُگنی مصیبت ہے نا اُمیدی میں موت جلدی آتی ہے خوشحالی میں احتیاط برتتا ہے اس پر مصیبت نہیں آتی اللہ کے پیاروں کو جلد موت آتی ہے لڑائی کے ساتھ مصیبتیں آتی ہیں مصیبت یا خوشی اکیلی نہیں آتی گئی ساکھ پھر نھیں آتی مقدمہ کا فیصلہ ہونے کے بعد عقل آتی ہے مصیبت کبھی تنہا نہیں آتی جو بات دل میں ہو وہ ضرور زبان پر آتی ہے ایک ہی جگہ سب کو موافق نہیں آتی جِدھر سے مُصیبت آتی دیکھو اس کے انسداد کی کوشش کرو بیوقوفوں کو پچھتاوے سے ہی عقل آتی ہے سیاہی جو کاغذ کو گرم کیے بغیر نہیں آتی شرمساری غرور کے پیچھے پیچھے آتی ہے غرور کا انجام ندامت ضرورت کے وقت انسان کسی قانون کی پرواہ نہیں کرتا وقت کسی کا انتظار نہیں کرتا صبر وہ ہے جو کسی وقت ہاتھ سے نہ جاۓ شہرت اور وطن کی محبت کو کسی اور انعام کی ضرورت نہیں تکلیف دہ حالات جِس کا پیٹ بھرا ہو وہ بھوکے کی تکلیف کیا سمجھتا ہے انتظار کی تکلیف موت سے بڑھ کر ہے مایوسی صرف تکلیف ہی نہیں بڑھاتی بلکہ کمزوری میں بھی اضافہ کرتی ہے تکلف میں ہے تکلیف سرا سر سوچ سمجھ کر کام کیا جاۓ تو بعد میں تکلیف نہیں ہوتی روپیہ کمانا خوشگوار تکلیف ہے دینا عزت کا کام ہے مانگنا باعث تکلیف و شرمندگی ہے جو تکلیف اُٹھانا نہیں چاہتا وہ آرام کا مُستحق نہیں جو تکلیف اٹھا سکتا ہے فتح اسی کو نصیب ہوتی ہے بیکاری از حد تکلیف دہ ہے زیادتی تکلیف دہ ہوتی ہے اصل وجہ تکلیف قوانین کی کثرت تکلیف دہ ثابت ہوتی ہے تکلیف دہ منظر تکلیف کے بغیر راحت نہیں ملتی تکلیف کے بغیر آرام کہاں تکلیف ایجاد کی ماں ہے تکلیف دہ واقعات بدلہ لینا گویا تکلیف کا اقرار کرنا ہے جتنی زیادہ تکلیف اتنی زیادہ عزت تکلیف کو بڑھانا تکلیف کی وجہ معلوم ہونا اتفاق میں آرام نفاق میں تکلیف تکلیف دہ واقعات۔ حالات کو سہنا کُتے کے بھونکنے سے کوئی چور نہیں بن جاتا گیروے کپڑوں سے کوئی جوگی نہیں ہو جاتا آب زم زم نہانے سے کوئی مومن نہیں بن جاتا کوئی ہو کام سب کے بغیر چل جاتا ہے ایک دم کوئی نیک نہیں بن جاتا گوشہ نشینی سے ہی کوئی عقلمند نہیں بن جاتا بُرے وقت کا کوئی ساتھی نہیں وقت ضائع کرنے والا کبھی کوئی کام نہیں کر سکتا موت کا کوئی وقت معیّن نہیں موت کا کوئی وقت نہیں ہوتا لڑائی کے وقت اگر کوئی ممنوع فعل سرزد نہ ہو تو صلح کے بعد دِلوں میں کدورت نہ رہے گی بُری کتاب سے بڑھ کر وقت ضائع کرنے والی کوئی چیز نہیں وقت سے زیادہ قیمتی کوئی چیز نہیں وقت کی دست برد سے کوئی چیز محفوظ نہیں وقت سے بڑھ کر کوئی واعظ نہیں شادی اور تعمیر عمارت میں خرچے کا اندازہ لگانا مشکل ہوتا ہے کاہلی سب کاموں کو مشکل بنا دیتی ہے اور مشقت آسان عورتوں اور کاریگروں کو قابو میں لانا مشکل کام ہے جُدائی محبت کے لیے ایسے ہی جیسے آگ کے لیے ہوا تھوڑی کو تو بجھا دیتی ہے لیکن روشن کو اور بھڑکاتی ہے کُتب اور دوست تھوڑے لیکن اچھے رکھنے چاہئیں زر کا نقصان کچھ نقصان نہیں ہمت گئی تو بہت گیا اگر عزت گئی تو اور بھی زیادہ نقصان ہوا لیکن نیک و بد میں تمیز نہ رہی تو سمجھو کہ انسان کے پاس کچھ بھی باقی نہ رہا بیٹے کی شادی ہوئی اور ہاتھ سے گیا لیکن بیٹی کو شادی کے بعد بھی والدین سے محبت رہتی ہے ایک دانے سے بوری تو نہیں بھرتی لیکن ایک دانہ بھی اور دانوں کو بوری بھرنے میں مدد دیتا ہے غرور اور مفلسی اگرچہ بے جوڑ ہیں لیکن اکثر اکٹھے رہتے ہیں شیطان اور سب انسانوں کو ورغلاتا ہے لیکن بیکار خود شیطان کو بلاتا ہے آنکھ اور سب کچھ تو دیکھ لیتی ہے لیکن اپنے آپ کو نہیں دیکھ سکتی ریتی اور چیزوں کو ریتتی ہے لیکن خود بھی گھستی ہے دُنیا میں نیکی اور بدی دونوں ہیں لیکن بدی ذرا زیادہ ہے نیک آدمی باہم اتفاق کر سکتے ہیں لیکن بُرے اور بد اصول آدمی لڑے بھڑے بغیر نہیں رہ سکتے اندھا دھندی سے نقصان بہتوں کو فائدہ کسی کسی کو کسی نہ کسی طرح ختم کرنا بعض جو کسی کی برائی نہیں کرتے کسی کا بھلا بھی نہیں کرتے کسی نہ کسی طرح کسی کے منہ سے نو ا لہ چھین لینا یعنی کسی کی ر و ز ی چھین لینا بہت دیر سے وعدہ پورا کرنے میں دیر کرنا ناانصافی ہے کمبخت پر مُصیبت آتے دیر نہیں لگتی بہت دیر بعد کھبی نہ کرنے سے دیر سے کرنا بہتر ہے دیر میں ہونا بہتر بہ نسبت اس کے کہ کبھی نہ ہو جب اپنی اُتار لی تو دوسرے کی اتارتے کیا دیر لگتی ہے دیر کرنے سے نقصان ہوتا ہے خیالِ اوّل دیر پا ہوتا ہے دن پھرتے دیر نہیں لگتی اللہ کو فضل کرتے دیر نہیں لگتی اللہ کے ہاں دیر ہے اندھیر نہیں اللہ کو اپنا جلوہ دکھاتے دیر نہیں لگتی دیر ہے مگر اندھیر نہیں اچھے مال کے بکنے میں دیر نہیں لگتی جِس حکومت کو عوام نفرت کی نِگاہ سے دیکھتے ہوں وہ زیادہ دیر تک نہیں رہ سکتی دیر کر کے مدد دی نہ دی برابر جتنی جلدی کرو اتنی ہی دیر لگتی ہے کڑی مصیبت تھوڑی دیر رہا کرتی ہے جھوٹ دیر تک چھپا نہیں رہ سکتا پاگل کتا دیر تک زندہ نہیں رہتا کچھ دیر رہنے والی خوشی چوٹ لگتے اتنی دیر نہیں لگتی جتنی علاج میں افواہ پھیلتے دیر نہیں لگتی دیر تک بیٹھنا جو مدد دیر سے پہنچے اس مدد سے کیا فائدہ شیطان کا ذکر کرنے کے دیر ہے وہ جھٹ آن موجود ہوتا ہے جھوٹ کے زبان سے نکلنے کی دیر ہے کہ تم کو جھٹلانے والے سینکڑوں کھڑے ہو جائیں گے آندھی جتنی تیز ہوگی اتنی ہی تھوڑی دیر رہے گی جھوٹی خبر پھیلتے دیر نہیں لگتی دنیا کی اصلیت کا بڑی دیر میں پتہ چلتا ہے کام اچھا ہو چاہے دیر سے ہو ادھ جلی لکڑی کو جلاتے کتنی دیر لگتی ہے آنے والا دن گزرے ہوے سال سے بھی بڑا نظر آتا ہے جو آدمی مُصیبت میں دوسروں کے کام آتا ہے گویا اپنا فرض پہچانتا ہے بڑھاپے میں عاقبت کا خیال آتا ہے کاہل آدمی کے ہاتھ سواۓ ندامت کے کُچھ نہیں آتا غصہ کِس کو نہیں آتا دوسرے کا کام سب کو آسان نظر آتا ہے ساون کے اندھے کو ہرا ہی ہرا نظر آتا ہے تجربہ دھوپ میں بال سفید کرنے سے نہیں آتا اچھی خبر لانے والا رعب سے آتا ہے جو بعد میں آتا ہے وہ دوسروں کے تجربات سے فائدہ اُٹھاتا ہے گُفتگو کے بغیر کچھ نہیں آتا گیا اعتبار پھر واپس نہیں آتا تمہارے جلدی جاگنے سے سورج جلدی نہیں نکل آتا مصیبت اُٹھاۓ بغیر راحت کا لُطف نہیں آتا عیار سے عیاری کرنے میں دگنا لطف آتا ہے حاسد کو تل پہاڑ نظر آتا ہے جو آتا ہے اپنا ہی سِکہ چلاتا ہے مصیبت میں خدا ہی یاد آتا ہے بوند کا گیا پھر حوض سے نہیں آتا گانٹھ کا پیسہ ہی کام آتا ہے کام سے کام آتا ہے آسمان کا تھوکا مُنہ پر آتا ہے بدلہ لینے میں مزہ آتا ہے جو دِل میں ہو وہی زبان پر آتا ہے جو دل میں ہوتا ہے وہی زبان پر آتا ہے لعل گدڑیوں میں بھی ہوتے ہیں بعض اوقات کیچڑ سے بھی ہیرا نکل آتا ہے آج کل شاگرد ہے حاصل کیا ہوا تجربہ کام آتا ہے کسی کے نصیب کا کوئی ساتھی نہیں بانٹ لے کوئی کسی کا درد یہ ممکن نہیں کسی کا کوئی کام کر دینا اپنے سے زیادہ کوئی کسی کو نہیں چاہتا سیاہ بختی میں کب کوئی کسی کا ساتھ دیتا ہے نہ کسی کو دعوت دو نہ کوئی ناراض ہو گا کوئی شخص بغیر اپنے مطلب کے کسی پر احسان نہیں کرتا ہر چیز کا کوئی نہ کوئی مصرف ہے بوتا کوئی ہے کھاتا کوئی ہے بہت سے کام ہاتھ میں ہوں گے تو کوئی نہ کوئی بگڑے گا ہی ہل کوئی چلاۓ بیج کوئی بوۓ نہ جانے پھل کون کھاۓ سیوا کرے کوئی میوہ کھائے کوئی کوئی دکھی کوئی سکھی آدمی آدمی انتر کوئی ہیرا کوئی کنکر حقیر سے حقیر کام میں بھی کوئی نہ کوئی راز ہوتا ہے خوشامدی کے کاٹے کا نہ کوئی جنتر نہ کوئی منتر انڈے سیئے کوئی بچے لے کوئی انڈے دیوے کوئی بچے سیوے کوئی کرے داڑھی والا پکڑا جائے مونچھوں والا کرے کوئی بھرے کوئی کرے کوئی بھرے کوئی کوئی بیوقوف کوئی عقلمند دنیا میں روپ روپ کے آدمی ہیں موت اور سورج کو ٹکٹکی لگا نہیں دیکھا جاتا بڑھاپے کے ساتھ آدمی حلیم طبع اور نیک ہو جاتا ہے انسان کھیل اور سفر میں پہچانا جاتا ہے کھوٹا بیٹا اور کھوٹا پیسہ کبھی نہ کبھی کام آ ہی جاتا ہے محبت اور خون آخر ظاہر ہو جاتا ہے اب لیاقت کا معیار صرف دولت ہے دولت ہی سے عزت ملتی ہے اور دولت ہی سے دوست ہر جگہ بیچارہ غریب ہی روندا جاتا ہے وقت پڑنے پر دوست اور دشمن کی پہچان ہوتی ہے لڑائی میں کبھی پہل نہ کرو اور صُلح کے لیے ہر وقت تیار رہو موت اور گاہک کا کیا وقت خوشی اور امن کا وقت زندگی بھر مشقت اور مرتے وقت دُعا گُزرتے ہوۓ وقت اور بہتے ہوۓ دریا کو کون روک سکتا ہے فالتو وقت اور فالتو پیسہ کبھی اپنے پاس نہ رکھو صرف وقت پر ہمارا قبضہ ہے اور کچھ ہمارا نہیں بڑھاپا اور وقت بہت کچھ سکھا دیتے ہیں ایک وقت اور جگہ وقت اور سوچ بچار بڑے سے بڑے غم کو ہلکا کر دیتے ہیں وہ دوستی خاک جِس کو ذرا سی ٹھیس لگی اور ٹوٹی لعنت ہے ایسی دوستی پر جِس کو ہر وقت خریدنا پڑے محبت اور شے ہے اور صحبت اور شے اچھی چیزیں جلد چھن جاتی ہیں پاک جامہ پہن لینے سے ناپاک روح صاف نہیں ہو جاتی چھوٹی ندی آسانی سے پار ہو جاتی ہے کوڑی کوڑی کرکے مایا جڑ جاتی ہے باغ دیکھ کر مالی کی ذات پہچانی جاتی ہے ہار جیت کھیل کے بعد جانی جاتی ہے نذرانہ سے معافی مل جاتی ہے گُفتگو سے اصلیت جانی جاتی ہے دُکھ کی رات پہاڑ ہو جاتی ہے موقع کے بعد عقل کس کو نہیں آ جاتی اگر اعتقاد ہو تو کان سے سنی بات دِل میں جگہ پا جاتی ہے محبت کم ہونے پر خوبیاں بھی عیبوں میں تبدیل ہو جاتی ہیں مُنافع میں سب تکلیفات بھول جاتی ہیں ڈائن بھی دس گھر چھوڑ جاتی ہے اُمید ہو تو ہمت دوبالا ہو جاتی ہے اچھی چیز خود بخود مشہور ہو جاتی ہے رفتہ رفتہ محبت ہو جاتی ہے عادت خصلت ہو جاتی ہے خوشی کی گھڑیاں جلد گزر جاتی ہیں بُری خصلتیں خود ہی آ جاتی ہیں بری خبر جلد پھیل جاتی ہے بُری خبر جلد پھیل جاتی ہے محنت کبھی رائیگاں نہیں جاتی جِس کے بُرے دن آتے ہیں پہلے اس کی عقل بگڑ جاتی ہے جو بات برسوں میں نہ ہو ہونے لگے تو وہ پل بھر میں ہو جاتی ہے اچھی پوشاک شرافت کی نشانی گنی جاتی ہے رسی کے بار بار گھسنے پر پتھر پر بھی لکیر پڑ جاتی ہے برسوں کی مصیبت لمحہ بھر میں دور ہو جاتی ہے جس چیز کو بھی وہ ہاتھ لگائے سونا بن جاتی ہے شادی کے بعد محبت ہو ہی جاتی ہے زر سے اُداسی جاتی رہتی ہے پوری حِفاظت کرنے پر بھی مصیبت آ ہی جاتی ہے حاسد کو ذرا ذرا سی بات نظر آ جاتی ہے بڑے بڑے معاملات کی نسبت چھوٹی چھوٹی باتوں میں اطاعت زیادہ دیکھی جاتی ہے ایک خرابی سے ہزار خرابیاں پیدا ہو جاتی ہیں کاہل سوتے ہی رہتے ہیں دنیا اپنا کام کر جاتی ہے موت کے بعد قدر پہچانی جاتی ہے سیدھے سادھے گم گو آدمیوں کی ہر جگہ قدر کی جاتی ہے بے بنیاد بدنامی بہت جلد دور ہو جاتی ہے رکھی ہوئی چیز کام آ جاتی ہے کوشش کبھی رائیگاں نہیں جاتی خِدمت بغیر صِلہ سزا ہو جاتی ہے بہت سے آدمی ہوں تو گڑ بڑ ہو جاتی ہے مصیبت میں بہت سی حقیقتیں آشکار ہو جاتی ہیں بعض مصیبتیں پرواہ نہ کرنے سے ہی ٹل جاتی ہیں قدم قدم چل کر منزل طے ہو جاتی ہے بُری عادت جلد پڑ جاتی ہے چیز جِس قدر خوبصورت ہو اتنی جلدی خراب ہو جاتی ہے پیدا ہوتے ہی موت کی تیاری شروع ہو جاتی ہے نیکی اللہ کے ہاں لکھی جاتی ہے گھر کی حالت سے مالک کی اصلیت جانی جاتی ہے ضرورت پڑنے پر چیز کی قدر معلوم ہو جاتی ہے ہنسی مذاق میں سچی باتیں بھی مُنہ سے نکل ہی جاتی ہیں بعض اوقات شیطان کے منہ سے بھی سچی بات نکل جاتی ہے دو برائیاں مل کر ایک بھلائی نہیں بن جاتی اپنی تعریف کرانے کے لیے دوسروں کی تعریف کی جاتی ہے جب دل پر چوٹ لگی ہوئی ہو تو کچھ نہ کچھ بات منہ سے نکل ہی جاتی ہے جب دل میں محبت نہ رہے تو خوبیاں بھی عیب ہو جاتی ہیں نرمی سے جھگڑے کی بنیاد مٹ جاتی ہے چہرہ سے عمر معلوم ہو جاتی ہے بہروں کی آنکھیں تیز ہوتی ہیں اور وہ کسی کا اعتبار نہیں کرتے حق کی راہ پر چلو اور کسی کی پرواہ مت کرو اتنا ہی کافی ہے کہ تم بدی کے مرتکب ہوۓ خواہ اور کسی کو معلوم ہو یا نہ ہو اصول ہذا کے تحت پولیس کے لئے لازم ہے کہ وہ کسی کے گھر داخل ہونے سے قبل دستک دے اور اپنی شناخت کرائے کسی کی کمزوری کو سمجھنا اور فاہدہ اٹھانا کسی کی کمزوری کو سمجھنا اور فائدہ اُٹھانا کسی بات کو سکھانے کا سب سے سیدھا اور اچھا طریقہ تمثیل ہے دوستی میں یاد رکھنا کہ ممکن ہے کسی دن دشمنی ہو جاۓ اور دشمنی میں بھی کبھی حد مناسب سے تجاوز نہ کرنا کہ ممکن ہے کہ کبھی سلوک کی ضرورت پڑ جاۓ گھوڑا اور کسی چیز سے اتنا موٹا نہیں ہوتا جتنا آقا کی نظر شفقت سے جتنی عزت رحمدلی کی ہوتی ہے اتنی اور کسی چیز کی نہیں ہوتی بچپن میں اچھی تربیت جِس قدر ضروری ہے اتنی کسی اور چیز کی نہیں باتونی نہ تو کسی کی سنتا ہے اور نہ کچھ سیکھتا ہے اللہ کی رحمت اور نیکی کی کوئی انتہا نہیں سدا نہ جوبن ساتھ رہے اور سدا نہ جیوت کوئی بھلا کرو اور تم پر کوئی انگلی نہ اٹھا سکے نمک اور سورج سے بڑھ کر کوئی چیز مفید نہیں محبت اور نفرت کی کوئی وجہ نہیں ہوتی جہاں درخت ایک دفعہ جڑ پکڑ گیا اور قدرے بڑا ہو گیا پھر اسے سینچنے کی کوئی ضرورت نہیں بچے اور عورتیں کبھی کوئی راز پوشیدہ نہیں رکھ سکتے جالی دار پردے کے پیچھے ناچتے ہو اور گمان پر کرتے ہو کہ کوئی تم کو نہیں دیکھ سکتا طبیب امام اور وکیل سے کوئی بات پوشیدہ مت رکھو مڑنا پلٹنا گھوم کر دُوسری طرف منہ کرنے کا عمل تبدیلی لانے کا کام باری باری بدل بدل کر گردش پلٹ جانے کا عمل یا کوئی مثال رُح کی تبدیلی یا رُخ کا بدلنا متبادل طریقے سے روش اور پالیسی کا پلٹ جانا انگلستان ضروری سامان رقم اور معلومات کے بغیر کوئی کام کرنے کی کوشش کرنا انگلستان ، ضعروری سامان رقم اور معلومات کے بغیر کوئی کام کرنے کی کوشش کرنا مشکل میں دوست گنوانا سہل حاصل کرنا مشکل نیک نامی گنوانا سہل حصول مشکل مشکل کام قرض کے دام سے نکلنا مشکل ہے کام شروع کرنا ہی مشکل ہوتا ہے غُصہ پر قابو پانا سب سے مشکل کام ہے کام کرنا مشکل ہے بنانا مشکل ہے ڈھانا آسان مشکل علاج بہت مشکل سے کہنے سے کرنا مشکل ہے نفرت کی نسبت حسد کو مغلوب کرنا مشکل ہے نُکتہ چینی آسان کام کرنا مشکل مشکل سے نکالنا روپیہ کمانا مشکل ہے لٹانا آسان ہے بھلے آدمی بڑی مشکل سے ملتے ہیں مشکل مسئلہ مشکل صور تحال میں ہونا اچھے دِنوں میں بُرے دِنوں کیک نسبت ثابت قدم رہنا زیادہ مشکل ہے مشکل میں یا بھیس میں طاقتور کے لئے حلیم طبع ہونا مشکل ہے تعمیر کرنے کی نسبت حِفاظت کرنا زیادہ مشکل ہے مکان کو گرانا آسان بنانا مشکل مُضحکہ اڑانا آسان بس میں کرنا مشکل دوکان کھولنا آسان ہے دوکانداری کرنا مشکل ہے بڑے رُتبے پر جاکر حلیم طبع ہونا مشکل ہے بڑے کی درخواست پر نہیں کہنا مشکل ہے الزام دینے کی نسبت بجا تعریف کرنا زیادہ مشکل ہے کام کو شروع کرنے کی نسبت ختم کرنا مشکل ہے کام شروع کرنا ہی مشکل ہے پُرانا گھاوٴ مشکل سے بھرتا ہے سب سے مشکل کام کو نباہنا آدمی کا فرض مقدم ہے آدمی ملتا ہے بہت مشکل سے مشکل سے بچنا مشکل معاملہ بوڑھوں کو دھوکہ دینا مشکل ہے مشکل حالت میں گرنا آسان ہے اُٹھنا مشکل مشکل بچہ مشکل پر قابو پانا سر سری مشکل دینا مشکل ہونا کہنا آسان کرنا مشکل کئے بغیر کس طرح معلوم ہو کہ کام مشکل ہے یا آسان مشکل پکڑنا یا اختیار کرنا مشکل کا نتیجہ ممکن ہے خوشگوار ثابت ہو بہترین چیزیں مشکل سے دستیاب ہوتی ہیں بڑھاپے میں قدم مشکل سے اُٹھتا ہے جو وعدے مشکل سے کرتا ہے وہی اس کو وفاداری سے نباہتا ہے مشکل میں ڈالنا سخت اقدامات سے مشکل پر قابو پانا لینا بڑی مشکل سے گزارہ کرنا مشکل کو دعوت دینا مشکل پیدا کرنا مشکل کام کرنا مشکل سے بچنے کا رستہ بہادری سے مشکل کا سامنا کرنا فرصت میں چین مشکل سے حاصل ہوتا ہے چھپے گھاوٴ مشکل سے بھرتے ہیں جہاں ایک بار جڑ پکڑ لی پھر عیب مشکل سے چھوٹتا ہے بھرا پیالہ لے کر جانا سخت مشکل ہے بڑی مشکل سے جیتنا سچا دوست ملنا مشکل ہے کیونکہ وہ تو گویا دوسری شکل میں تم خود ہی ہو باتیں بنانا آسان ہے کام کرنا مشکل من بھر وعظ سے توبہ بھر عمل اچھا ہے گالی دینا مشکل الفاظ ختم کرنا مشکل ہونا زخم لگانا آسان علاج کرنا مشکل مشکل وغیرہ میں پوشیدہ مسکن قیام گاہ مشکل میں بکھری ہوئی مشکل حالات میں زند ہ رہنے کے لیے جدوجہد کرنا جسم و جاں کا رشتہ بر قرارر کھنا مشکل حالات میں زندہ رہنے کے لیے جدوجہد کرنا جلتی پر تیل ڈالنا۔ مشکل کرنا احمَق بہت کُچھ طلَب کرتا ہے لیکن جو شَخص اُسکو دیتا ہے وہ اُس سے بھی بڑا احمَق ہے رنج بٹانے سے کم ہوتا ہے لیکن خوشی بڑھتی ہے حُسن میں طاقت ہے لیکن دولت سب سے زیادہ طاقتور ہے کام کاج دماغ کو تقویت دیتے ہیں لیکن زیادہ مُطالعہ اسے کمزور کرتا ہے رشتہ اتفاق سے لیکن دوستی مرضی سے ہوتی ہے شغل بدل سکتے ہیں لیکن دوست مستقل چاہیئں دھوکہ باز بھاگنے کی کرتا ہے لیکن دیانتدار کو کیا ڈر جھوٹ گو فائدہ مند معلوم ہو نقصان پہنچاۓ گا لیکن سچ اگرچہ ظاہر میں نقصان دہ نظر آۓ دراصل فائدہ مند ثابت ہوگا احمق ایک دوسرے کے دُشمن ہوتے ہیں لیکن عقلمند اتفاق کی خوبیاں جانتے ہیں لبھانے والی لیکن ممنوعہ شے نیک نصیحت دی جا سکتی ہے لیکن نیک اطوار نہیں سکھاۓ جا سکتے بڑے بڑے کام برسوں میں انجام پاتے ہیں لیکن منٹوں میں بگڑ جاتے ہیں عادات شروع میں معلوم نہیں ہوتیں لیکن بعد میں رسوں کی طرح جکڑ لیتی ہیں محسن کو احسان بھول جانا چاہیئے لیکن احسان مند کو نہیں وہ سارے جہاں کو خوش کرتا ہے لیکن خود خوش نہیں جو چھوٹی باتوں میں بے ایمانی کرے وہ بیوقوف ہے لیکن جو بڑی چیزوں میں بے ایمانی کرے وہ بیوقوف نہیں مکار ہے جو زر چراتا ہے قید بھگتنا ہے لیکن جو ملک چراتا ہے بادشاہ بنتا ہے مشتبہ معاملات میں دلیری سے بہت کام نکل سکتا ہے لیکن مہلک معاملات میں صبر سے غلطی ہر انسان سے ہوتی ہے لیکن بار بار غلطی کرنا بیوقوف کا کام ہے آہستہ لیکن باقائدہ کا م عیاری ممکن ہے ایک بار کام دے جاۓ لیکن دیانتداری کو کبھی ناکامی کا مُنہ دیکھنا نہیں پڑتا محنت اگرچہ تلخ ہے لیکن اس کا پھل شیریں ہوتا ہے مشکلات کی تاک میں رہو لیکن ان کے پیدا کرنے کا باعث مت بنو محبت اندھی ہے لیکن دور تک دیکھتی ہے محبت دل کے کہنے سے شروع ہوتی ہے لیکن دِل کے کہنے سے ختم نہیں ہو سکتی محبت چاہے تھوڑی ہو لیکن مستقل تو ہو رشتہ دار بہت لیکن سب مطلب کے مفلسی میں بے عزتی نہیں ہے لیکن گدائی باعث حقارت ہے حیا زیور ہے لیکن لوگ اس کے بغیر اچھے رہتے ہیں زر خدمتگار اچھا لیکن آقا بُرا فرض بے حد ناخوشگوار ہے لیکن اس کا پھل شیریں ہوتا ہے قدرتی بیوقوفی قابل برداشت ہے لیکن پڑھے لکھے بیوقوف سے اللہ بچاۓ آندھی تناور درختوں کو اکھاڑ دیتی ہے لیکن سرکنڈوں کو کچھ نہیں کہتی انسان چنوں پر تو جی سکتا ہے لیکن ہوا پر نہیں صبر میں بڑی برداشت ہے لیکن آخر اس کی بھی انتہا ہے صبر اگرچہ تلخ ہے لیکن اس کا پھل میٹھا ہے دیانتداری جوہر ہے لیکن جو اسے استعمال کرتے ہیں کنگال مرتے ہیں پچھتاوا اچھی چیز ہے لیکن بے گناہی اس سے بھی اچھی ہے بات تھوڑی کرو لیکن مطلب کی اپنے دوستوں کی تعریف کرو لیکن دشمن کے متعلق کچھ نہ کہو بیوقوف بہت کچھ مانگتا ہے لیکن جو اسے دیتا ہے وہ اس سے بھی بڑھ کر بیوقوف ہے دولت تو بہت لیکن وفا نایاب مختصر لیکن جامع قسمت ہم پر حکمرانی کرتی ہے لیکن اللہ قسمت پر گو زبان بنا سوچے سمجھے کہہ دیتی ہے لیکن عقلمند ہاتھ سب پر عمل نہیں کرتا کچھ کتابیں اچھی ہیں کچھ درمیانہ درجے کی لیکن زیادہ تر بُری ہیں ہر مرض کے لیے دواء موجود ہے لیکن انسان اس کو نہیں پاتا آرام کا خیال بے شک کرو لیکن کام نہ چھوڑو اللہ نے سب انسانوں کو ایک ہی مٹی سے بنا دیا لیکن سب کا سانچہ جدا جدا رکھا دوسرے کا اعتبار خوشی سے کرو لیکن اپنا بھی خیال رکھو سچ چبھتا ہے لیکن جھوٹ پیارا لگتا ہے عیب ایک دم لیکن نیکی آہستہ آہستہ گھر کرتی ہے تاخیر ناگوار گزرتی ہے لیکن یہ ہم کو عقل سکھاتی ہے عورت کی ہنسی موقعہ پر لیکن اس کا رونا اس کے اپنے ہاتھ میں ہوتا ہے تمہارا طرزِ تحریر عالمانہ لیکن طرزِ تقریر کو سادہ رنگ لئے ہوۓ ہونا چاہیئے انسان کو قصور معاف کر دینے چاہیئیں لیکن دوسروں کے اپنے نہیں جو آدمی کام میں مصروف ہو اسے صرف ایک شیطان ستاتا ہے لیکن بیکار کو ہزاروں مرد مکان بناتا ہے لیکن گھر بسانا عورت کا ہی کام ہے اشرفیاں لٹیں کوئلوں پر مہر بڑی رقم کی پروا نہ کرنا لیکن چھوٹی چھوٹی رقمیں بچا کر رکھنا شراب پی کر مست نہ ہو تو معمولی بات ہے لیکن جو دولت پاکر مست نہ ہو وہ مرد ہے بولنا قدرت سکھاتی ہے لیکن چپ رہنا عقل سکھاتی ہے صورت بدلی جا سکتی ہے لیکن سیرت نہیں بدلی جا سکتی صداقت کو دبایا جا سکتا ہے لیکن مٹایا نہیں جا سکتا گنجا سَر جلد مُنڈ جاتا ہے کبھی اندھے کے بھی ہاتھ بٹیر لگ جاتا ہے پیش بندی سے خطرہ ٹل جاتا ہے کمزور جسم سے دل بھی کمزور ہو جاتا ہے بے عقَل کا تِیر جَلدی چَل جاتا ہے شریف دِل مُلائم دھاگے سے بندھ جاتا ہے سونے کی چابی سے ہر تالا کھل جاتا ہے ماہر تیر انداز اپنے تیروں سے نہیں بلکہ اپنے نشانے سے پہچانا جاتا ہے نیک آدمی جلد خُدا کو پیارا ہو جاتا ہے بعض اوقات ماہِر نشانچی کا نشانہ بھی خطا ہو جاتا ہے حاسد کا سر جلد پھوٹ جاتا ہے غریب آدمی تھوڑے ہی میں خوش ہو جاتا ہے بعض اوقات چھوٹا آدمی بھی بڑا کام کر جاتا ہے آدمی صحبت سے پہچانا جاتا ہے آدمی اپنی صحبت سے پہچانا جاتا ہے ایک بار چوری کرنے سے انسان چور نہیں بن جاتا رِشوت سے کام نکل جاتا ہے لاڈ پیار سے بچہ بگڑ جاتا ہے مرنے پر کچھ ساتھ نہیں جاتا ہوا کا رُخ ایک تنکے سے معلوم ہو جاتا ہے درخت اپنے پھل سے پہچانا جاتا ہے کاریگر کام سے پہچانا جاتا ہے تِلوار کا گھاوٴ بھر جاتا ہے زُبان کا گھاوٴ نہیں بھرتا تھوڑا تھوڑا کر کے بہت ہو جاتا ہے اخلاق کو ہر جگہ خوش آمدید کہا جاتا ہے سب کو ایک لاٹھی سے نہیں ہانکا جاتا ایک ہی لاٹھی سے سب کو نہیں ہانکا جاتا پیستے پیستے آدمی کولہو کا بیل بن جاتا ہے غُصے میں آدمی اندھا ہو جاتا ہے جِس طرف شاخیں جھکیں درخت بھی اسی طرف جھک جاتا ہے سارا جاتا دیکھئے آدھا دیجئے بانٹ سارا جاتا دیکھئے تو آدھا دیجئے بانٹ جب سارا جاتا دیکھیے تو آدھا دیجئے بانٹ نکالتے نکالتے قارون کا خزانہ بھی خالی ہو جاتا ہے خیرات میں دیا رائیگاں نہیں جاتا روز کے ٹپکے سے پتھر بھی گھس جاتا ہے تیزی میں معاملہ بگڑ بھی جاتا ہے بوند بوند کر کے تالاب خالی ہو جاتا ہے ہر شخص خود ہی اپنی تباہی کا باعث بن جاتا ہے انسان اپنی گفتگو سے پہچانا جاتا ہے تیس برس کی عمر کے بعد آدمی یا تو بے وقوف ثابت ہوتا ہے یا حکیم بن جاتا ہے بُری افواہ پر لوگوں کو جلد اعتبار آ جاتا ہے تلوار کا گھاوٴ بھر جاتا ہے بات کا زخم نہیں بھرتا دور کا نشانہ عموماً چوک جاتا ہے آگ کے کھیلنے سے ہاتھ ضرور جل جاتا ہے خوبصورت قفس سے پرندے کا پیٹ نہیں بڑھ جاتا بیوقوفی کا پودا بلا سینچے ہی بڑھتا جاتا ہے اچھے ساتھ سے سفر جلد طے ہو جاتا ہے خوشحالی میں انسان رشتے بھول جاتا ہے کوڑی کوڑی نِکالنے سے خزانہ خالی ہو جاتا ہے شرارتی کو شرارت کرنے کے لئے موقع مل ہی جاتا ہے بھوک میں سب کچھ کھایا جاتا ہے نشہ میں زبان سے سچ نکل جاتا ہے اعتبار آدمی پر کیا جاتا ہے اس کی دولت پر نہیں انسان رُتبے سے جانا جاتا ہے راحت کا زمانہ ہوا کے جھونکے کی مانند گزر جاتا ہے جو بُرے آدمیوں کی صحبت سے نہیں بچتا وہ خود بھی ویسا ہی ہو جاتا ہے بادشاہوں کے کانوں تک سب کچھ پہنچ جاتا ہے رونے دھونے سے دکھ کم ہو جاتا ہے ہنستے بولتے سفر آسانی سے طے ہو جاتا ہے پھوئی پھوئی کر کے تالاب بھر جاتا ہے ذرا سی چنگاری سے جنگل خاک ہو جاتا ہے چھوٹوں کو غصہ جلد آ جاتا ہے جو اُدھار لے کر گزر جاتا ہے اسے دُگنا ادا کرنا پڑتا ہے انسان اپنی صحبت سے پہچانا جاتا ہے بہت سے کرنے والے ہوں تو کام جلد ہو جاتا ہے زیادہ وعدوں سے اعتبار جاتا رہتا ہے جتنا بیج بویا جاتا ہے فصل اس سے بھی زیادہ ہوتی ہے محبت میں رقیب ضرور پیدا ہو جاتا ہے ہم سفر اچھے ہوں تو سفر آسانی سے طے ہو جاتا ہے جوں جوں انسان بوڑھا ہوتا ہے زندگی سے پیار بڑھتا جاتا ہے بوڑھوں کو جلد غصہ آ جاتا ہے اکثر اپنے سے چھوٹوں سے بھی کام پڑ جاتا ہے ایک ہی بار کوشش سے کام نہیں ہو جاتا بوند بوند کر کے تالاب بھر جاتا ہے پیسہ پیسہ کر کے قارون کا خزانہ خالی ہو جاتا ہے پھل والے درخت پر ہی پتھر پھینکا جاتا ہے جو کفایت شُعاری نہیں برتتا تباہ ہو جاتا ہے بازار میں جوتے پڑیں تو آدمی بے شرم بن جاتا ہے مذہب ایک ٹٹی ہے جس کی آڑ میں شکار کھیلا جاتا ہے حق کو اگر استعمال میں نہ لایا جاۓ تو وہ ضائع ہو جاتا ہے پوری کوشش نہ کرنے سے کام بگڑ جاتا ہے استقلال والا آہستہ چل کر بھی بازی لے جاتا ہے جب سر پر پڑتی ہے تو منکروں کو بھی اللہ یاد آ جاتا ہے بچے کو مارو نہیں تو بگڑ جاتا ہے آدمی کی بات چیت سے دل کا حال معلوم ہو جاتا ہے ایک ایک سیڑھی چڑھ کر زینہ ختم ہو جاتا ہے جو پرائی آس تکتا ہے وہ جیتے جی مر جاتا ہے آدمی کپڑوں سے پہچانا جاتا ہے دس کا گروہ بن جاتا ہے چَنوں کے ساتھ گُھن بھی پِس جاتا ہے بھیڑوں کی اڑائی ہوئی مٹی سے بھیڑیئے کا گلا نہیں گھٹ جاتا مٹی سے جو کچھ پیدا ہوتا ہے آخر مٹی میں مل جاتا ہے دل کا حال چہرے سے عیاں ہو جاتا ہے لگاتار پانی کی بوندیں گرنے سے پتھر میں بھی سوراخ ہو جاتا ہے سیر کو سوا سیر مل جاتا ہے گیہوں کے ساتھ گھن بھی پِس جاتا ہے متواتر استعمال سے لوہا بھی گھس جاتا ہے لنگڑے آدمی کی نسبت جھوٹ جلد تر پکڑا جاتا ہے دولت کا مزہ حرص سے جاتا رہتا ہے امیر کو ہر جگہ خوش آمدید کہا جاتا ہے زیادہ باتیں بنانے سے دماغ خالی ہو جاتا ہے بانٹ کر کرنے سے کام ہلکا ہو جاتا ہے میٹھی زبان سے جو حکم دیا جاتا ہے اس میں بڑی طاقت ہوتی ہے کاٹھ کے ساتھ لوہا بھی تر جاتا ہے چھوٹے کام میں ہاتھ ڈالو تو بڑا کام بن جاتا ہے غریب کے منہ کا نوالا چھین کر امیر کے منہ میں ڈالا جاتا ہے آدمی جتنا یاد رکھتا ہے اس سے زیادہ بھول جاتا ہے بیوقوف جب تک ارادہ کو مصمم کرتا ہے موقعہ ہاتھ سے نکل جاتا ہے مرے پر ساتھ کچھ نہیں جاتا اللہ کا قہر دیکھ کر چور بھی ایماندار ہو جاتا ہے شراب پی کر انسان بد حال ہو جاتا ہے خوش قسمت آدمی مٹی کو ہاتھ لگاتا ہے تو سونا ہو جاتا ہے جسم سے آدمی کی عمر کا پتہ چل جاتا ہے نیک صحبت ترقی کا زینہ ہے کاٹھ کے ساتھ لوہا بھی تر جاتا ہے جو کِسی جُرم کو نظر انداز کرتا ہے وہ خود ہی قصور وار سمجھا جاتا ہے ایک اندر دوسرا باہر آفتاب طلوع ہوتا ہے چاند غروب ہو جاتا ہے جہاں چاہ وہاں راہ جس کے لیے دل میں جگہ ہو اس کے ساتھ گزارہ بھی ہو جاتا ہے نیک آدمی ہر وقت سیکھنے کے لیے تیار رہتا ہے جو شخص لے کر دینا جانتا ہے اس کے لیے بازار ہر وقت کھلا ہے وقت پر دیا ہوا تھوڑا ہی بہت ہوتا ہے ایک وقت میں دو کام نہیں ہو سکتے وقت پر ایک ٹانکا نو کا کام کر دیتا ہے بعد از وقت نصیحت فضول بعد از وقت سمجھ آئی تو کیا حق بات کے لیے ہر وقت موزوں افلاس قبل از وقت بوڑھا بنا دیتا ہے مقررہ وقت کے بغیر وقت کی پابندی سب طرح کا سُکھ ہر چیز کا وقت ہوتا ہے اصلاح ہر وقت کی اچھی ظالم کو ہر وقت کھٹکا لگا رہتا ہے ہر وقت سوچنا وقت ضائع کرنا نہیں ہے ایک وقت میں دو دشمنوں کا مُقابلہ نہ کرو وقت پر کام شروع کرنے میں آسانی رہتی ہے رات ۱۰ بجے سے پہلے کا وقت عین وقت پر ترقی کے لیے مخصوص وقت ہر چیز اپنے وقت پر اچھی لگتی ہے ضروت کے وقت کام نہ آئے اس وقت نظر آنے والا جنگ کے وقت دُشمن کے حمایتی پرانے وقت کے لیے اللہ ہر وقت مدد کرنے کے لئے تیار رہتا ہے جو مہمان وقت پر آتے ہیں ان کی قدر زیادہ ہوتی ہے پاپی کو ہر وقت ڈر لگا رہتا ہے خوشی میں وقت گُزرتا معلوم نہیں ہوتا بُری بات کو ہر وقت سوچتے رہو تو وہ ہو کر رہتی ہے اچھا وقت آنا آڑے وقت کے لئے کُچھ بچا رکھو فرصت کا وقت ضائع کرنے کے لئے نہیں ہے تھوڑے علم والا ہر وقت اسکی نُمائش کرتا ہے عمل کا وقت اگر کچھ بچاوٴ گے نہیں تو وقت پر نکالو گے کہاں سے پیچھے ہٹتے وقت لنگڑے سب سے آگے جب اوروں کے کام ختم کرنے کا وقت ہوتا ہے تو کاہل آدمی کام لے کر بیٹھتا ہے اللہ عین وقت پر مدد کرتا ہے ضمیر کی عدالت ہر وقت کھلی رہتی ہے نیکی کرنے کے لئے ہر وقت موزوں ہے مصیبتوں کو ہر وقت یاد کرتے رہنے سے ان کو بھول جانا اچھا ہے ضرورت کے وقت گدھے کو بھی باپ بنا لیتے ہیں وقت گزر جائے تو پچھتانے سے کیا فائدہ غریب آدمی کو ہر وقت نقصان کا ڈر رہتا ہے انسانیت ہر وقت پیش نظر رکھنی چاہیئے وقت ضائع کرنا انسان کو انسان سے ہر وقت خطرہ رہتا ہے انسان کا دل ہر وقت کچھ نہ کچھ کام کرنے کو چاہتا ہے حمل کے ابتدائی مراحل میں صبح کے وقت متلی آنا رات کے وقت دیکھ سکنے کی قوت وقت بہت تیزی سے بھاگتا ہے کچھ کرنے کے وقت پورے وقت پر ہر ایک بات وقت کے مطابق ہونی چاہیئے بے وقت اگر پیشگی اجرت دے دو تو کام کبھی وقت پر نہ ہوگا حصول مہارت کے لیے وقت درکار ہے صیح وقت پر ملنے والی ہوا چاہے کتنی جلدی کرو فصل تو وقت پر ہی تیار ہو گی دولت کو ہر وقت خطرہ ٹال مٹول وقت کا چور کھانے کا وقت پابندی وقت کاروبار کی جان ہے مصیبت کے وقت کے لیے کچھ بچا رکھو وقت یا وقتاً فوقتاً میٹھی باتوں میں وقت گزرتا معلوم نہیں ہوتا خطرہ کی جگہ سے گزرتے وقت جلدی نہ کرو شیطان ہر وقت اپنی شیطانیت میں مشغول رہتا ہے مجرم کو ہر وقت کھٹکا لگا رہتا ہے بُرا ہر وقت بُرائی پر آمادہ خواہش بعد از وقت پوری ہوتی ہے غیب کے خزانے ہر وقت بھرے رہتے ہیں اچھا وقت آ رہا ہے ہر کام کے لیے وقت ہوتا ہے جیسا وقت اب ہے پھر کبھی ایسا نہ ہوگا اچھے برے وقت میں طبیب سے بہتر معالج وقت ہے وقت ہر گھاوٴ بھر دیتا ہے وقت ہی انسان کا رہنما ہے وقت بہترین صلاح کار ہے وقت ہی سب سے بڑا تسلی دینے والا ہے وقت سب زخموں کا مرہم ہے وقت کبھی واپس نہیں لوٹتا وقت ہر غم کا علاج ہے وقت صداقت کی کسوٹی ہے وقت ہمیں کمزور بنا دیتا ہے کمزور کو ہر وقت خطرہ جو احسان مانے اس کی ہر وقت مدد کرنی چاہیئے وقت ضائع کر دینا جس کام کے لیے وقت معین نہ ہوگا وہ ہر گز پایہ تکمیل کو نہ پہنچے گا جو مصیبت سے ڈرتا ہے اس کو ہر وقت دھڑکا لگا رہتا ہے پسِ انداز کرنے کا وقت جوانی ہے حملے کا صیحح وقت اِس وقت فی الحال پلک جھپکتے مین بہت کم وقت میں بہتی گنگا میں ہاتھ دھونا وقت کو غنیمت جانو ترقی کیے بغیر کام کرتے جانا وقت گزارنا وقت تھوڑا کام زیادہ عمر کوتاہ قصہ طولانی روپے کا قرض اور چیز ہے احسان کا قرض اور چیز بڑھاپا اور شادی انسان اور حیوان دونوں کو رام کر دیتے ہیں خوشامدی اور دوست میں اتنا ہی فرق ہے جتنا بھیڑیئے اور کتے میں تعریف احتیاط سے اور بُرائی اور بھی زیادہ احتیاط سے کہنا اور کرنا اور ممالک مشرقی روحانی نور کا سرچشمہ ہیں اور ممالک مغربی ضبط و انتظام اور نظم و نسق کا کینہ اندھا ہوتا ہے اور سواۓ اچھی باتوں کی بُرائی کرنے کے اور کچھ نہیں جانتا کہنا کچھ اور ہے کرنا کچھ اور شے جلدی سونا اور جلدی اُٹھنا انسان کی صحت دولت اور عقل سے نوازنا ہے بد نام کنندہ سے انتقام لینے کا بہترین طریقہ یہ ہے کہ اسے معاف کر دیا جاۓ اور اس کے ساتھ نرمی اور نیکی کا سلوک روا رکھا جاۓ عفو میں جو لذت ہے وہ انتقام میں نہیں بدنام کنندہ سے انتقام لینے کا بہترین طریقہ یہ ہے کہ اسے معاف کر دیا جاۓ اور اس کے ساتھ نرمی اور نیکی کا سلوک روا رکھا جاۓ عفو میں جو لذت ہے وہ کسی تعظیم سے براہ راست منسلک نہ ہونا کسی کی پسند کے مطابق کسی کی عزت پر دھبہ بادشاہی کسی کی میراث نہیں کسی بات کو بہت سوچو تو ہو گُزرتی ہے کسی چیز میں اپنا حِصّہ ہو تو وہ بڑی دکھائی دیتی ہے جہا تک کسی کی نظر پہنچ سکے مُصیبت میں کسی پر اعتبار نہیں رہتا کاریگری کیا جو ہر کسی کو نظر آ جاۓ اللہ کے سوا کسی کے آگے ہاتھ مت پھیلاوٴ کسی بھی صورت کسی بھی صورت میں کسی چیز کی کسی کی شفوت سے محر و م ہو جا نا کسی کی جگہ پر آنا یا لینا کسی سے بھید مت کہو جہاں تک ہو سکے کسی کو ناخوش نہ کرو کسی کو برباد کرنے کے لئے اس کے خرچ پر گذرا اوقات کرنا کسی بھی ہنگامی صور تحال کیلیے مناسب کسی حد تک معلوم کیا کسی کو دردِ نہاں ہمارا یکساں نہیں رہتا ہے زمانہ کسی کا کسی بھی حالت میں کسی کا احسان اُٹھایا ہے تو اس سے فائدہ اُٹھاوٴ احمقوں کو کسی بات کی خبر نہیں ہوتی مخفی طور پر کسی حمائت حاصل کرنا کسی پوزیشن سے تقدیر ہمیشہ کسی کا ساتھ نہیں دیتی کسی کو منہ پر الزام دینا کسی مقصد کے لیے ملاقات کرنا کسی کے اچھے حالات کو خراب کرنا کسی کی اچھی بات پر عمل کرنا کسی بھی کاروبار کے لیے مناسب مُنافع اچھا لگتا ہے خواہ کسی طرح حاصِل ہو کسی کو پوری طرح سمجھنا کسی کی بر تری تسلیم کرنا دُنیا میں سدا کسی کی یکساں نہیں گزرتی جو کسی کی نصیحت نہیں سنتا اس کی کون مدد کرے گا جِس نے بُرائی کا مصمم ارادہ کر لیا ہو اس پر کسی کے وعظ کا اثر نہیں ہو سکتا جو کسی کے لیے گڑھا کھودتا ہے خود ہی اس میں گرتا ہے جو اپنے حق یا حقوق پر اڑنا ہے وہ کسی کا کچھ نہیں بگاڑتا جنت کسی بھی قیمت پر ارزاں ہے اگر زر کی قیمت جاننا چاہتا ہو تو کسی سے مانگ کر دیکھو بُری نیت سے کبھی کسی کو فائدہ نہیں ہوتا کسی کا معتو ب یا منظو ر نظر کسی کا ملازم ہونا کسی کے بارے میں بُری بات کی طرف داری کرنے کی کسی کی ہمت نہیں پڑتی ہر ایک پر بھروسہ کر لینا اتنا ہی بُرا ہے جتنا کسی پر بھی بھروسہ نہ کرنا کسی کے راز ظاہر کرنا واجب نہیں انصاف کسی کی حمایت نہیں کرتا صرف حق کو پہچانتا ہے کسی کو سخت سزا دینا کسی کام کے کرنے کا علم قانون کا انت کسی نے نہ پایا کسی کو پکڑنا دیکھنا کہیں تمہارے غصے سے کسی کو نقصان نہ پہنچے کسی کو غریب ہونے کی بنا پر چھوڑنا واجب نہیں کسی کو غلط ثابت کرنا کسی میں طاقت ہونا کسی کو پسند کرنا ہی محبت کی ابتدا ہے کسی کی یاد زندہ ہونا کسی شخص کا مذاق اڑانا کسی کو حیران کر دینا کسی کے خلاف ہونا کسی کو نصیحت کرو تو پوری ادھوری بات سے سراسر نقصان ہوتا ہے کسی بھی مشکلات سے نکلنا دیانتداری کر کے آج تک کسی دیانتدار کو پچھتانا نہیں پڑا دنیا میں خوش نصیبی ہمیشہ کسی کا ساتھ نہیں دیتی اپنے عیبوں کو جاننے سے کسی کو نقصان نہیں پہنچتا بُری خبر لانے والا کسی کو اچھا نہیں لگتا سدا کسی کی نہیں رہی ناممکنات کسی کو باندھ نہیں سکتیں کسی صورت بھی نہیں کسی شخص پر نہیں کسی بات کی زیادہ فِکر نہیں کرنی چاہیئے دنیا میں کسی بات کا بھی بھروسہ نہیں غیر متعلقہ سوال کسی کے ذریعے پوچھنا ماں کے پیار جیسا کسی کا پیار نہیں کسی کی ذمہ داری جو کسی کو متوجہ کرے کسی کو وہ کچھ دکھانا جو وہ نہ جانتا ہو کسی کا رخ موڑ کسی شخص سے دھوکہ کرنا کسی شخص کا بات کو بصد دعویٰ پیش کرنا اس بات پر دلالت ہے کہ اس کی قوت فیصلہ کتنی گھٹیا ہے کسی کی حد سے زیادہ تعریف مت کرو کیونکہ زمانہ تغیر پذیر ہے کسی چیز کی قیمت کسی چیز کو پڑھنا کسی چیز کو ناکام کرنے سے روکنے کی حفاظتی دیوار حق بات سے کسی کو نقصان نہیں پہنچ سکتا کسی کام کے لیے مناسب نہ ہونا میٹھا بول کسی کو نقصان نہیں پہنچاتا کسی کی طرف سے بولنا کسی کی نظر میں اچھا ہونا کسی سے سبق حاصل کرنا جو بات کسی کو بتانا نہیں چاہتے اس کو اپنے تک ہی رکھو پیٹ کسی کی نہیں سنتا کسی کی بُرائی بیان کرنا بیوقوف اپنے سواۓ کسی کے کام کو ٹھیک نہیں سمجھتا دانا آدمی کا دل مانند آئینہ ہے ہر چیز کا عکس دکھا دیتا ہے مگر خود کسی کا اثر قبول نہیں کرتا کسی کی حالت یکساں نہیں رہ سکتی انسان کو غرور کسی حالت میں زیب نہیں دیتا دریا دل کب کسی کو انکار کرتے ہیں جتنا کسی بات کو بُرا سمجھو اس کا نتیجہ اتنا ہی اچھا ہوتا ہے کسی کام کو کرنے کا صرف ایک ہی طریقہ نہیں ہوتا غیر ممالک میں جانے سے کسی کی خصلت نہیں بدل سکتی کسی بھی اہم سلسلے میں کسی کام کو ناممکن خیال کرنا ہی اس کام کا ناممکن بنانے کا طریقہ ہے بہادر آدمی کسی کا سہارا نہیں ڈھونڈتا کسی چیز کی کھچڑی بنا دینا کسی کا راز معلوم کرنا کسی پر پورا کنٹرول ہونا کسی مضمون کا عبور ہونا کسی کو مسلسل پر یشان کرنا کسی کے مقابِل کچھ نہ لگنا کسی کے مقابل کچھ نہ لگنا کسی آدمی کو بہادر بنانا ہو تو خوب لعنت ملامت کرو کسی کے سر پر انعام رکھنا زیادہ صلاح و مشورے کسی کی عقل کو ٹھکانے نہیں رہنے دیتے کسی پر بھروسہ کرو تب اس کو دغا بازی کا موقع ملتا ہے کسی قسم کا بھی بے قاعدہ کام ہو آخر میں دیوالیہ نکال کر رہے گا اگر کسی چیز کا استعمال نہ کیا جاۓ تو وہ نہ ہونے کے برابر ہے فتح ہمیشہ شاندار ہوتی ہے خواہ وہ کسی طریقے سے حاصِل ہوئی ہو کسی کے ساتھ کہیں انسان کی کسی چیز کو قیام نہیں امیر کا کتا مرا ہزاروں افسوس کے لیے آۓ غریب کی بیوی مری کسی نے بات تک نہ پوچھی خوشامد کو کسی شرارت بھرے منصوبے کا آغاز سمجھو عام لوگوں سے ملے جلے بغیر کسی بات کا پتہ نہیں لگتا جو سب کا میت کسی کا میت نہیں کسی حمایت کے بغیر ظلم کرنا کسی حالت میں بھی روا نہیں غصہ کی نسبت غور و خوض کسی کام پر فتح پانے کا بہتر طریقہ ہے کسی نے لقمان سے پوچھا عقل کس سے سیکھی جواب دیا بیوقوفوں سے کسی بھی صورت میں گردیدہ شیدا چاہ کن راہ چاہ درپیش جو کسی کے لیے کنواں کھودتا ہے وہ خود ہی اس میں گرتا ہے کسی کا ٹھہرنا ناممکن بنانا یہ محا و ر ہ اس صو ر ت حا ل میں بو لتے ہیں جب تجر بہ علم نہ رکھنے وا لا ایک شخص اپنے جیسے کسی دوسر ے شخص کی ر ہنما ئی کر رہا ہو کسی کے لیے کام کرنا مخالفت حمائت ز ہن پر سوار ہو نا کسی چیز کا خبط ہو نا سانس رکنا کسی خوف یا صدمے کی وجہ سے سانسں رکنا کسی خوف یا صدمے کی وجہ سے دوراندیش کسی بات میں شبہ نہیں رہنے دیتا شائق ہونا ، کسی چیز کیلئے ننگا کھڑا جاڑ میں ہے کوئی لے کپڑے اُتار دنیا میں کوئی چیز ناکارہ نہیں ہوتی تھوڑا بچانا کوئی جرم نہیں محنت جس کا کوئی فائدہ نہ ہو کہیں کوئی کسر ضرور ہے آزادی سے بڑھ کر نہیں کوئی شے اپنی غلطی کو کوئی نہیں مانتا ہر کوئی اپنے آپ کو محبت کرتا ہے محنت کے بغیر کوئی کام نہیں ہو سکتا خیرات کرنے سے کوئی غریب نہیں ہوتا اصلاح کوئی جرم نہیں جو کام مجبوری کی حالت میں کیا جاۓ اس کے لیے کوئی ذِمہ دار نہیں ٹھہرایا جا سکتا چین کی زندگی سے بڑھ کر کوئی نعمت نہیں ساری دُنیا کو کوئی خوش نہیں کر سکتا سُست آدمی کی کوئی مدد نہیں کرتا لالچ سے کوئی دولت مند نہیں ہوتا دیکھا گیا بوڑھے عاشق زیادہ کوئی بے وقوف نہیں غمگین کے پاس کوئی بیٹھنا پسند نہیں کرتا کالے پر دوسرا کوئی رنگ نہیں چڑھ سکتا آوٴ تمہارا گھر جاوٴ کوئی جھگڑا نہیں قناعت سے بڑھ کر کوئی دولت نہیں موت کا کوئی علاج نہیں موت کا کوئی اعتبار نہیں تمہاری بابت تم سے بہتر کوئی اندازہ نہیں لگا سکتا آج ایسا کوئی کام نہ کرو جِس پر کل پچھتانا پڑے آئندہ کی اُمید پر کوئی چیز بھی ضائع نہیں کرنی چاہیئے کوئی تحفہ نہ لانا بے موت کوئی نہیں مرتا اپنی چیز کی ہر کوئی تعریف کرتا ہے ہر کوئی اپنی چھاچھ کو کوئی کھٹا نہیں کہتا اپنی چھاچھ کو کوئی کھٹّی نھیں کہتا ہر بات کی کوئی وجہ ہوتی ہے قصور اپنا ہو کوئی لگاۓ الزام زمانے کو دُنیا میں کوئی چیز فائدے سے خالی نہیں کوئی کام مکمل کیے بغیر شروعات کا مظاہر ہ بیوقوفی کا کوئی علاج نہیں عیب سے کوئی پاک نہیں جِس میں جتنے کم ہوں وہی اچھا کوئی قدر نہ ہونا اللہ کا قہر صرف نپا تلا ہوتا ہے مگر اس کی مہر کی کوئی انتہا نہیں اللہ سب کچھ دیکھتا ہے اس کو کوئی نہیں دیکھ سکتا خوشی یا غم عموماً انہیں کو ملتا ہے جِن کے پاس ان میں سے کوئی ایک موجود ہو احسان فراموش پر کوئی دوبارہ احسان نہیں کرتا سدا کی ہاۓ ہاۓ کوئی نہیں سُنتا بن بُلاۓ مہمان کو کوئی نہیں پوچھتا جو امید کھو بیٹھے اس سے بڑھ کر کوئی بد قسمت نہیں اگر تم کوئی ایسی چیز حاصِل کرنا چاہتے ہو جو تمہارے پاس نہیں تو حالات کے مطابق اپنا رویہ بدلو جِس کو کوئی آرزو نہیں وہ غریب نہیں پیدائشی نقص کا کوئی علاج نہیں جِس کو رکھے سائیں مار سکے نہ کوئی کوئی فائدہ حاصل کرنا دُکھ میں امید سے بڑھ کر کوئی شے نہیں کوئی خطرناک شے جِس بات کا علم نہ ہو اس کے ماننے میں کوئی شرم نہیں جنہیں کوئی کام نہ ہو وہ عام طور پر سب سے زیادہ مشغول نظر آتے ہیں اگر پانی سے گھی نکلے تو کوئی روکھی نہ کھائے قانون کے نہ جاننے کا بہانہ کر کے کوئی بَری نہیں ہو سکتا خرچ کئے بغیر کوئی کام نہیں ہوتا بنجر زمین میں کوئی چیز نہیں اُگتی اللہ کے قہر کا کوئی علاج نہیں قبر ہی ایسی جگہ ہے جہاں جا کر کوئی نہیں لوٹتا موت کا کوئی مقام مقرر نہیں اس لئے ہر جگہ خبردار رہو بُری کہانی کوئی دوبارہ نہیں سنتا اپنی حیثیت سے بڑھ کر کوئی کام کرنا بُرا ہے عیار سمجھتا ہے کہ عیاری کے بغیر کوئی کام نہیں چل سکتا ایسی جگہ جہاں ہر کوئی اپنی مرضی کر سکے مُفلسی سے بڑھ کر کوئی مصیبت نہیں کاہلی کے برابر کوئی مشقت نہیں فیاضی کی کوئی حد نہیں کوئی خیال یا علم اتنے میٹھے نہ بنو کہ ہر کوئی کھا جاۓ اگر دنیا میں ہر گناہ گار کو سزا مل سکتی تو کوئی بھی نہ بچتا کوئی فرق نہیں پڑتا دلائل کو مکمل کرنے کے لیے کوئی نقطہ یا اہم بات انسان کے لیے زر سے بڑھ کر کوئی چیز نہیں ہر کوئی طلوع ہوتے ہوۓ آفتاب کی پرستش کرتا ہے مسرت سے بڑھ کر کوئی شے نہیں قدرت کا کوئی کام فائدہ سے خالی نہیں ضرورت میں کوئی چیز مہنگی نہیں پڑتی اوزاروں کے بغیر چاہے عقلمند ہو یا بیوقوف کوئی کچھ نہیں کر سکتا بغیر اچھی طرح دیکھے بھالے کوئی چیز نہ خریدو جس کی کھبی بھی کوئی نہ تھی میرا کوئی بھی کام ٹھیک نہیں ہوتا کوئی بھی قبرستان اس قدر خوبصورت نہیں کہ اس کو دیکھ کر انسان کا دل مرنے کو چاہے کوئی بھی عقل پر مبنی نہیں بے رحمی سے بدتر کوئی چیز نہیں سُست کا کوئی حامی نہیں بوڑھے بیوقوف سے بڑھ کر کوئی بیوقوف نہیں پیسے برابر کوئی نہ میت اللہ کی مار کے برابر کوئی مار نہیں کوئی منصف مزاج آدمی کبھی یکایک دولتمند نہیں بنا کوئی شخص اپنی حیثیت سے باہر کام نہیں کر سکتا اپنی دولت کو کوئی بھی زیادہ نہیں سمجھتا زندگی کا ٹھیکہ لے کر کوئی نہیں آیا کوئی شے ہمیشہ دولت نہیں رہتی کوئی بات نہیں کوئی خبر نہ آۓ تو سمجھ لو کہ سب خیریت ہے کوئی بھی نہیں امیر کے سب سالے غریب کا کوئی بہنوئی بھی نہیں اپنے لئے کوئی پیدا نہیں ہوتا انسان دوسروں کے لئے پیدا ہوتا ہے اس غلام سے بڑھ کر کوئی غلام نہیں جو خود کو آزاد سمجھتا ہو بغیر طاقت کوئی عزت نہیں اگر کام کرنے سے پہلے تمام نقائص کو رفع کرنے کی کوشش کی جاۓ تو دنیا میں کوئی کام کبھی شروع ہی نہ ہو کوئی بھی کام پہلی ہی کوشش میں نہیں ہوتا دنیا میں کوئی عیب ایسا نہیں جو انسان میں نہ ہو شریف کو کوئی بے عزت نہیں کرتا اوروں کی مصیبت کو کوئی کیا جانے شاذ ہی کوئی ایسا ہوگا جو نیکی کا صِلہ نہ چاہتا ہو نیک کو نیک راہ سے کوئی نہیں ہٹا سکتا ہے جلدی میں کوئی کام ٹھیک نہیں ہوتا کوئی چیز بُری نہیں اگر اس کا ٹھیک مطلب سمجھ میں آ جاۓ خوش مزاج بیوی سے بڑھ کر کوئی نعمت نہیں جو غفلت شعار ہو اس کے لئے کوئی کام آسان نہیں شوق کے آگے کوئی چیز نا ممکن نہیں دنیا میں نہ کوئی چیز پیدا ہوتی ہے نہ فنا ہوتی ہے محض شکل کی تبدیلی ہوتی ہے دنیا میں کوئی بات نئی نہیں ہے بھول جانے سے بڑھ کر نقصان کی کوئی تلافی نہیں خیرات کرنے سے کوئی کنگال نہیں ہوتا راۓ وضع کی طرح ہوتی ہے نئی نئی خوبصورت لگتی ہے پرانی کو کوئی نہیں پوچھتا اپنی راۓ کو کوئی غلط نہیں مانتا دولت مند ہونا کوئی جرم نہیں غریب کو یہی خیال رہتا ہے کہ ہر کوئی اس کو حقارت سے دیکھتا ہے کوئی چال جیتنا راحت سے بڑھ کر نہیں کوئی شے بڈھے کا کوئی لاگو نہیں زر سے بڑھ کر کوئی دوا نہیں آنکھ جھپکتے میں کوئی دولت مند نہیں ہوا استعمال سے کوئی چیز اتنی نہیں گھستی جتنی بے مصروف پڑے رہنے سے اپنی تعریف کرنا کوئی بڑائی نہیں کوئی نُمایاں کامیابی حاصل کرنا دنیا میں مرد عورت کوئی بھی عیب سے پاک نہیں گناہ گناہ ہے خواہ کوئی دیکھنے والا ہو یا نہ ہو جِس میں کوئی خصوصیت ہو اس میں تھوڑا سا غرور ضرور ہوتا ہے اگر اپنی حیثیت کی جگہ بیٹھو گے تو تمہیں کوئی نہیں اُٹھا سکتا نیند سے بہتر کوئی دوا نہیں شبہ میں کوئی برائی نہیں بشرطیکہ اس کو ظاہر نہ کیا جاۓ پرانے دوست سے بڑھ کر کوئی آئینہ نہیں ہزار کوئی ماہر ہو جوا تباہ کئے بغیر نہیں چھوڑتا زراعت سے بڑھ کر کوئی معزز پیشہ نہیں سیہ بختی میں کوئی دولت نہیں جو کوئی معجزہ نہ کر کے دکھاۓ اس کا مرید کون ایسا کوئی موقع نہیں جو دوبارہ نہ آۓ نودولتیئے سے بڑھ کر کوئی غرور نہیں ہوتا ایسی کوئی کہاوت نہیں جو سچی نہ ہو رنج و غم میں کوئی بات ٹھیک نہیں سوجھتی شریف آدمی کے لیے نیک نامی سے بڑھ کر کوئی ورثہ نہیں کوئی جذبات نہ ہونا دو مغرور آدمی کوئی کام مل کر نہیں کر سکتے قانون میں بے رحمی کا کوئی علاج نہیں نیکی سے بڑھ کر کوئی ڈھال نہیں اپنی چیز کی کوئی قدر نہیں کرتا مفت چیز کی کوئی قدر نہیں کرتا جب کوئی نئی چیز نظر آۓ تو دل میں نئے نئے خیالات پیدا ہو جاتے ہیں جب پاس ہمارے دولت تھی تب یار ہمارے لاکھوں تھے اب پاس ہمارے کچھ نہ رہا تو دوست ہمارا کوئی نہیں بے خبری میں اگر کوئی گناہ ہو جاۓ تو اسے گناہ نہیں کہہ سکتے گھائل کی حالت کوئی نہ جانے عشق کی راہ میں کوئی چوٹیں نہیں کھاتا جو پڑھ لکھ کر بھی بیوقوف رہے اس سے بڑھ کر کوئی بیوقوف نہیں دوست سے بڑھ کر کوئی نہیں دولت دنیا کی سب سے بڑی نعمت ہے جاکو راکھے سائیں مار سکے نہ کوئی جاکو راکھے سائیاں مار نہ سکے کوئی کوئی وجہ نہ ہونا جواب کی جو پڑھ لکھ کر بھی بیوقوف رہے۔ اس سے بڑھ کر کوئی بیوقوف نہیں کوئی وجہ نہ ہونا ، جواب کی لڑنا اور بھاگنا دونوں آدھے پیٹ ہو سکتے ہیں بہت مشہور اور سماجی شخص پاگل اور بیوقوف کا کیا اعتبار نیند اور ہوس ہی انسان کو فانی بناتی ہے جہاں دیکھے تواپرات وہیں گاۓ دن اور رات بے عقل انسان اور حیوان میں کیا فرق وعدہ خلافی کرنا اور جھوٹ بولنا برابر اچھائی اور برائی کا امتزاج مالک اور نوکر میں بڑا فرق عقلمند نفس پر قابو رکھتا ہے اور نفس بیوقوف پر عورت اور شیشہ حِفاظت میں رکھنا چاہیۓ زُبان سے نکلی بات اور کمان سے نکلا تیر واپس نہیں آتے اچھا اور برا مقام دوستوں کو نصیحت تنہائی میں اور تعریف مجمع میں کرنی چاہیۓ شادی اور لڑائی کے معاملے میں کبھی نصیحت نہ دو مُحبت اور جنگ میں سب کچھ جائز ہے خوش مزاجی اور زندہ دلی کامیابی کا راز ہے خود پرستی کے سواۓ بڑھاپا اور سب نفسانی خواہشوں کو ضائع کر دیتا ہے ہمیشہ ترقی کرنا اور دوسروں پر سبقت لے جانے کی کوشش کرنا انسان کا فرض ہے محنت اور اُمنگ سے بڑے بڑے کام ظہور میں آتے ہیں بُرائی اور بھلائی سب جگہ ہے غُصہ امیر میں نفرت اور غریب میں حقارت کا باعث ہوتا ہے بھلے آدمی کی سب تائید کرتے ہیں اور بھلی عورت جو کہے وہ ہو کر رہتا ہے بھیک اور بچھوڑ بچھوڑ پہلے روٹی پیچھے کُچھ اور من بھر کپاس اور تولہ بھر سونا برابر پرندے بے بس ہوتے ہیں تو ٹانگوں کے بس اور انسان زبان کے بس مکھن صبح کو صحت بخش دوپہر کو فائدہ مند اور شب کو نقصان دہ ہوتا ہے جتنی دولت اتنی ہی زیادہ ہوس اور فِکر عورت اور کپڑے کو دن میں دیکھ کر لینا چاہیۓ ایک اور ایک مل کر اگیارہ ہو جاتے ہیں حالات ہی بناۓ اور حالت ہی بگاڑے ضمیر روح کی آواز ہے اور جذبات جِسم کی بیٹیاں اور مری مچھلیاں رکھنے کی چیزیں نہیں زندگی اور موت کا انحصار زُبان پر ہے عروج اور کام میں موت تلخ معلوم ہوتی ہے نیکی اور پوچھ پوچھ نیکی اور پُوچھ پُوچھ نہ تو باتونی بنو اور نہ ہی کم گو خوف اور محبت کبھی یکجا نہیں رہتے کوشش بھی کی اور کام بھی نہ بنا تکلم اور شیریں زُبان کے بغیر تعلیم ادھوری رہتی ہے خوبصورت اور خود غرض اپنی عقل اور بُرائی سب کو بھلی لگتی ہے جس کا کام اسی کو ساجے اور کرے تو ٹھینگا باجے فرنی اور فالودہ ایک بھاوٴ نہیں بکتا بعض کاموں کے کرنے اور بعض کے نہ کرنے میں بڑائی ہے بُری صحبَت میں بیٹھ کر کٹائے ناک اور کان آنکھ مِچی اور مال دوستوں کا حسین بیوی اور سرحدی قلعہ لڑائی جھگڑے کی جڑ ہیں صداقت اور وفاداری سب سے افضل ہیں بن سلگی آگ اور زبردستی کی محبت آخر کب تک جانور اور پودے اعتدال سے کھاوٴ اور حکیم چٹخاوٴ مُنہ کھاۓ اور آنکھیں شرمائیں محبت اور باہمی عزت کا اظہار وہ کونسا دل ہے جِس میں مکّاری نہیں اور وہ کونسی زبان ہے جو دو طرفہ نہیں خوشامد بھلی لگتی ہے اور سچ بُرا زیادہ اور کم میل جول سے دوستی نہیں رہتی دوستی کا رشتہ اور سب رشتوں سے بڑھ کر ہے دوستی اور وفاداری دُنیا میں کہاں ہیں بُرے سے بُرائی کے سوا اور کیا توقع ہو سکتی ہے جوا اور جھوٹ ساتھ ساتھ مرنا اور دفن ہو جانا سستا اور آرائشی کام نیکی اور نیک نامی ساتھ ساتھ ہیں اللہ والدین اور آقا کے احسانات سے ہم کبھی سبکدوش نہیں ہو سکتے زر اور حکومت لڑائی کی جڑ ہے جنت کے در کے سواۓ اور سب در زر سے کھل سکتے ہیں خوشحالی فضول خرچ بنا دیتی ہے اور ادبار کفایت شُعار گپ شپ اور جھوٹ ساتھ ساتھ سچائی بڑی چیز ہے اور سب پر غلبہ پا لیتی ہے باتونی آدمی میں اور سوراخ والے گھڑے میں کُچھ باقی نہیں رہتا بڑے درخت سایہ کے سواۓ اور کِسی کام کے نہیں سستا اور گھٹیا ادب پھانسی اور بیوی اپنی اپنی قسمت سے مِلتی ہے مسلسل اور زیادہ شراب نوشی کرنے والا صاف اور واضع قابلیت اور توازن ہونا کچھ اور بھی کرنے کو ہونا چور سے کہے چوری کر اور شاہ سے کہے ہوشیار رہنا بِلی اور دودھ کی رکھوالی جو اپنی جان بچا سکتا ہو اور نہ بچاۓ وہ قاتل ہے ظالم کو معاف کرنا اور بے گُناہ پر غصہ نکالنا جِس کے پاس چار ہوں اور پانچ خرچے اس کو بٹوے کی کیا ضرورت ہے نیک اللہ سے ڈرتے ہیں اور گنہگار اس کی رحمت کے اُمیدوار ہیں مغرور آدمی میں غرور کے سواۓ اور کچھ نہیں مرتا صحت اور دولت بڑے کام کی چیزیں ہیں بے تکلف اور آزاد دوزخ اور عدالت کا در ہمیشہ کھلا رہتا ہے توانائی اور طاقت کا دور دیانتداری سے برف کے ٹُکڑے کی مانند ہے پگھلی اور گئی یہ منہ اور مسور کی دال گھوڑوں اور شاعروں کو جہاں کھانے کو بہت ملا بگڑے خوشامد اور دوستی میں مشابہت کیا چھوٹا اور موٹا بھوک اور سردی کے مارے پر دشمن قابو پا جاتے ہیں بے ترتیبی اور تیزی میری بلی اور مجھی سے میاوٴں اچھے آدمی کے دُشمن زیادہ اور دوست کم ہوتے ہیں گڑ کھائیں اور گلگلوں سے پرہیز شادی اور دوستی برابر والوں سے ہی مناسب ہے بیوی اور ہتھیار اپنی اپنی پسند کے اچھے دنوں میں روپیہ پیسے کے برابر اور بُرے دنوں میں پیسہ روپے کے برابر معلوم ہوتا ہے قطعی اور کلی طور پر محنت دولت کا دایاں ہاتھ ہے اور کفایت شعاری بایاں ایک کان سے سننا اور دوسرے سے اڑا دینا کہنے اور کرنے میں بڑا فرق ہوتا ہے نفسانی خواہشات ہی سب کچھ بناتی اور بگاڑتی ہیں نصیحت کو سن لینا اور اس پر عمل کرنا نصیحت دینے سے بہتر ہے اپنے وطن کے لئے باعِزت موت سے بڑھ کر اور کیا خوشی ہو سکتی ہے بدقسمت آدمیوں کی خصلت ہے کہ دوسروں کا برابر چاہیں اور اچھوں سے حسد کریں روحانی دولت ہی انسان کو امیر اور خوش بناتی ہے اور ملنے کی اُمید میں موجودہ کو پھینکنا دانائی نہیں بٹوا اور منہ بند ہی اچھے بادشاہ اور ریچھ اکثر اپنے محافظوں کو دق کرتے ہیں صلح کرلو اور دوست بن جاوٴ دُنیا عیاروں اور بیوقوفوں سے بھری پڑی ہے وہی چیز ایک کے لئے آب حیات ہے اور دوسرے کے لئے زہر جو شخص بچانے خریدنے اور خرچ کرنے کا موقع پہچانتا ہے وہ کبھی تنگ دست نہ رہے گا علم خزانہ ہے اور مشق اس کی چابی ہے آگے ہونا اور رہنمائی کرنا علم سے بعض لوگ فائدہ اُٹھاتے ہیں اور بعض کے لئے یہ صرف زیبائش کا کام دیتا ہے علم سے اچھا آدمی بہتر اور بُرا بدتر بنتا ہے علم سے عقلمند کی عقل بڑھتی ہے اور نادان کی نادانی طبیعت کی سستی اور خاموشی عشق کی علامت ہیں تھوڑا اور اچھا بچوں کی تکلیفات جسمانی ہوتی ہیں اور بڑوں کی روحانی چھوٹے دشمن اور چھوٹے گھاوٴ کو حقیر مت جانو جیو اور جینے دو زندگی علم سیکھنے کے لئے ہے اور زندگی گزارنے کا ٹھیک طریقہ علم سکھاتا ہے قرض لینے والے اور دینے والے دونوں ہی کے لیے باعث فکر و رنج ہوتا ہے اپنے مال کی حفاظت نہیں کرتا اور چور کا نام دھرتا ہے محبت اور کھانسی بھی کبھی چھپاۓ چھپتے ہیں عشق اور مشک چھپائے نہیں چھپتا عشق اور حسد عموماً اکٹھے پاۓ جاتے ہیں عشق اور حکومت میں رقیب بُرا لگتا ہے عشق اور مشک چھپاۓ نہیں چھپ سکتے محبت اور خصلت کبھی نہیں چھپ سکتی عشق میں اعتقاد کی اور اعتقاد میں استحکام کی ضرورت ہوتی ہے محبت کے لیے جھونپڑی اور محل کی قید نہیں عشق تلوار کے بغیر حکومت کرتا ہے اور بغیر زنجیر کے باندھتا ہے جھوٹ بولنا کمزوری ہے اور سچ صحت کی علامت سال بھر کے کام کا نقشہ پہلے ہی بنا لو اور اپنی بیوی کو پہلے روز سے ہی ٹھیک کرنا شروع کرو انسان کی شرافت دولت اور اطوار سے ہے مرد دُنیا پر حکومت کرتے ہیں اور عورتیں مردوں پر چکی اور بیوی کا پیٹ کبھی نہیں بھرتا حیا حُسن اور پاکدامنی کی مُحافظ ہے زر تو زر ہے اور سب خر ہے زر کے بغیر نہ لڑائی میں کام چلتا ہے اور نہ محبت میں پیسہ لیا نہیں اور غلام بنے صحیح اور غلط میں تمیز کرنے کی قوت دولت مند بننے کے لئے دو چیزیں ضروری ہیں محنت شاقہ اور بے ایمانی آٹھ پہر عبادت میں مصروف اور اللہ ترسی نام کو نہیں صیحح اور غلط کا شعور جو انسان کے ذہن سے ابھرتا ہے صاف اور سمٹا ہوا ضرورت اور موقع بُزدِل کو بھی بہادر بنا سکتے ہیں جو فقیر رہ چکا اس سے مت مانگو اور جو نوکر رہ چکا ہو اس کی نوکری مت کرو نیکی اور بدی ساتھ ساتھ چلتی ہیں نہ اپنی بُرائی کرو اور نہ تعریف تمہارے کام تمہاری بجاۓ سب کچھ کہہ دیں گے نہ تو عزت کی تحقیر کرو اور نہ عزت کے پیچھے بھاگو محنت کا صِلہ ضرور ملتا ہے اور صلہ بغیر محنت کے نہیں ملتا بُڈھا ہوا اور سیکھ بدی اور خوشی کا بیر ہے دوست کے بغیر خوشی حاصل نہیں ہو سکتی اور جب تک مصیبت نہ پڑے دوست کا پتہ نہیں لگتا دنیاوی فائدہ عزت کے مقابلے میں ہیچ ہے اور عزت ایمان کے مقابلے میں ایک عیب سے اور بہت سے عیب پیدا ہو جاتے ہیں اپنا دھن اور پرائی عقل سب کو تھوڑے لگتے ہیں ایسے بہرے سے زیادہ بہرا کون جو سن سکتا ہے اور نہ سنے نہ تو حد سے زیادہ امید رکھو اور نہ مایوس ہو تیل اور سچ اُبھرے پر اُبھرے بڑھاپا ہمیں عقلمند بھی بناتا ہے اور بیوقوف بھی تصویر اور لڑائی کو دور ہی سے دیکھنا چاہیئے ایک جھوٹ کے پیچھے دس جھوٹ اور بولنے پڑتے ہیں ایک جھوٹ کو ثابت کرنے کے لیے دس جھوٹ اور بولنے پڑتے ہیں مصوروں اور شاعروں کو مبالغہ کی اجازت ہے صبر اور محنت کی ڈالی میں پھل لگتا ہے دوست کے ساتھ خواہ تھوڑی نیکی کرو مگر دشمن کے ساتھ اور زیادہ نیکی کرو استقلال رکھو اور کبھی مت ڈرو جانا اور چُننا پائپ اور ڈرم محبت اور رحم دونوں بہن بھائی ہیں جانوروں اور پودوں کی بڑھنے کی طاقت مذاق اور شادی برابر والوں سے زیب دیتے ہیں خیال سزا اور انعام کا تصور غریب عموماً فیاض طبع ہوتا ہے اور امیر حریص ہوتے ہیں ملتوی کرنے اور ترک کرنے میں فرق ہے مُفلسی کا داغ کونسی مصیبت نہیں لاتا اور کیا کیا نہیں کراتا تعریف اچھوں کو اچھا اور بُروں کو بُرا بنا دیتی ہے دُعا اور نیکی ساتھ ساتھ بھلی معلوم ہوتی ہے دعا صبح سب سے پہلے اور رات کو سب سے بعد ٹال مٹول نقصان دہ اور تاخیر خطرناک وعدے انسان کو مقروض بناتے ہیں اور مقروض وعدے کرتے ہیں خوشحالی بیوقوفوں کو تباہ کر دیتی ہے اور عقلمندوں کو خطرے میں ڈال دیتی ہے خوشحال انسان نصیحت نہیں سنتا اور مصیبت سے نہیں ڈرتا دو اور دو چار کرنا جلتی آگ میں کودنا اور پھر قسمت کو کوسنا جلد بازی اور بہادری میں فرق ہے عقل اور اختیار دنیا کی دو سب سے افضل چیزیں ہیں عقلمند عقل سے اور بیوقوف لاٹھی سے چلتا ہے عقل جوان کو زندگی بسر کرنا اور بوڑھے کو مرنے کا طریقہ سکھاتی ہے اپنے غصہ کو قابو میں رکھو اور دوسروں کے غصے کو برداشت کرو بے چینی کے بعد چین اور پھر چین سے بے چینی اللہ پرستش کا حقدار ہے اور بادشاہ خِدمت کا دولت سے خواہشات کم ہونے کی نسبت اور زیادہ بڑھتی ہیں دیانتداری سے حاصِل کی ہوئی اور ٹھیک طریق پر استعمال میں لائی ہوئی دولت بڑی نعمت ہے دیانتدارانہ اور سیدھی سادھی ہر نئی بات پر فریفتہ اور شیدامت ہو شادی اور غم کا جوڑا ہے اہم اور نازُک معاملات اگر ایک بار بگڑ جائیں تو پھر درست نہیں کیے جا سکتے بادشاہ اور عاشق رقیب نہیں دیکھ سکتے تلاش کرنا اور پانا نوکری اور صبر لازم و ملزوم ہیں سونے سے چاندی اور نیکی سے سونے کی قیمت کم ہے گناہ اور افسوس سدا کے ساتھی ہیں اپنا گناہ اور اپنا قرض ہر شخص کو اصل سے تھوڑا لگتا ہے کاہلی اور علم کا بیر ہے تھوڑا منافع اور زیادہ بکری اپنا تو اتنا ہی ہے جتنا استعمال میں آۓ اور راہ اللہ میں دیا جاۓ اچھی اور میٹھی باتوں سے بہت کام نکلتے ہیں مصیبت اور خراب موسم کو کون خوش آمدید کہتا ہے پیڑ ببول کے بونا اور امید آموں کی رکھنا فصاحت کو چھوڑو اور عقل کی بات کرو مصیبت اور زیادہ سخت بنا دیتی ہے ایک ایک اور دو گیارہ ایک اور ایک مل کر گیارہ رہ ہو جاتے ہیں دوستی اور لڑائی میں بہانہ نہیں چلتا درزی اور مصنف کو رائج الوقت طریقوں کا خیال رکھنا چاہیئے زندگی کا سارا لطف محبت اور نیک نیتی کے ساتھ ہے جو دشمن اب دوست بن گئے ہوں انہیں اور دوبارہ اُبلے ہوۓ گوشت کو احتیاط سے برتو اپنے کردار اور صلاحیت کا اندازہ کرنا ہچکچاہٹ اور یقین کرنا قابلیت کام کرتی ہے اور ذہانت ایجاد کرتی ہے لگان اور پیچ برابر سخت ہوتے جائیں گے پرہیز اور مشقت دو سچے طبیب ہیں دولت کمانا بڑی مشقت کا کام ہے اس کا رکھنا بڑے خطرے کا کام ہے اور اس کا نقصان بڑی آزمائش ہے بُرے کا چال چلن تقریباً ہمیشہ نا پائیدار اور ہمیشہ بدلنے والا ہوتا ہے زمانہ ہمیشہ نا موافق اور ناساز گار نظر آیا کرتا ہے شیر اور بکری ایک گھاٹ پر پانی پیتے ہیں مٹی کے گھڑے اور پیتل کی گھڑیا کیا دوستی اِس دنیا میں جنت اور دوزخ کا انحصار عورت پر ہے شکم پرور اپنی تھیلی اپنے پیٹ میں رکھتا ہے اور زر پرست اپنا پیٹ اپنی تھیلی میں آنکھ اپنا اور کان دوسروں کا یقین کرتے ہیں چہرہ اور پیشانی دل کے دروازے ہیں جاہل طلب کرتا ہے مال اور عاقل کمال سکندرِ اعظم قد آور اور جسیم نہیں تھا بڑے واقعات اور اہم واقعات اکثر اوقات اتفاق سے ظہور میں آتے ہیں طریقہ اور وجہ سراہنے سے لڑکا اور زیادہ سر چڑھتا ہے شیر اور چوہا زر کی محبت اور علم کی محبت شاذ و ناذر ہی یکجا ملتی ہے سوال قانون کا ہے یہ نہیں کہ مدعی کون ہے اور فریق مخالف کون مصیبت گئی اور خدا کو بھولے دوسروں کی باتیں ہمیں اچھی لگتی ہیں اور ہماری دوسروں کو جو عضو چوٹ کھاۓ ہوۓ ہو وہ بہت خطرناک ہوتا ہے اور وہ چھوۓ جانے کو بھی برداشت نہیں کر سکتا اسی طرح سانپ کا ڈرا رسی سے بھی خوف کھاتا ہے ہر بات میں انسان اپنے آپ کو راستی پر اور دوسرے کو غلطی پر خیال کرتا ہے بعض اوقات انسان کو دیکھنا بھی پڑتا ہے اور بعض اوقات چشم پوشی بھی کرنی پڑتی ہے اللہ کے غریبوں کی غریبی قسمت کا نتیجہ ہے اور شیطان کے غریبوں کی غریبی عیب کا مذہب ہر زمانہ اور عمر کو زیب دیتا ہے نوکری اور نخرہ سوچو اور اللہ کا شکر کرو سوچنے اور جاننے میں فرق ہے ہزار بوڑھا اور دانشمند ہو نصیحت اس کو بھی سن لینی چاہیئے جو شخص ٹھیک طریقہ سے خرچ کرتا ہے اس کو اللہ اور دیتا ہے کتنا خیرات کرنا چاہیئے اور کتنا بچانا چاہیئے یہ عقل ہی سکھاتی ہے جانا اور ملنا مردے کا علاج اور بوڑھے کو نصیحت ایک ہی بات ہے کام کہیں اور دل کہیں اونٹ نگل جائیں اور دم سے ہچکیاں لیں یہ جال کہیں اور بچھانا میں تم سے خوب واقف ہوں آج اور کَل آج اور کل کوشش اور اعتقاد سے کیا کچھ نہیں ہو سکتا زندگی کا بہتر اور نیا شروع کرنا دو سیانے ملے اور لڑائی شروع ہوئی دو باتوں پر آدمی کو کبھی غصہ نہیں آنا چاہیئے ایک تو جسے وہ کر سکتا ہے اور دوسری وہ جو اس کے امکان سے باہر ہو ہر جگہ اور ہر موقع پر غصیل آدمی گھاٹے میں رہتا ہے وشت ناک اور آسیب زدہ ایک اور ایک گیارہ بجز اس کے کہ سیاق وسباق سے کچھ اور ظاہر ہو طاقت سے اور مستقل مزاجی سے میک اپ اور شیشے والا بیگ بد اعمالی اپنی سزا آپ ہے اور بعض اوقات اپنا علاج بھی عیب پوشیدگی میں ہی زندہ رہتے اور بڑھتے ہیں بادلوں میں گھر کر چاند اور زیادہ چمکتا ہے نیکی اور پیشہ بچوں کے لیے بہترین ورثہ ہے نیکی سے عزت اور عزت سے غرور پیدا ہوتا ہے خشکی و تری کا سفر اور جگہ کی تبدیلی تقویت بخشتے ہیں بڑھنا اور کم ہونا جب مار پڑی تو مکوں کیا اور لاتوں کیا اللہ دے اور بندہ سہے نئی بات بالعموم سچ نہیں ہوتی اور سچی بات نئی نہیں ہوتی اگر تم نہیں کرو گے تو اور ہزاروں کرنے والے موجود ہیں دولت بڑھی اور صحت بگڑی جھگڑے میں جو سب سے پہلے چپ ہو جاۓ وہی خاندانی اور شریف ہے جس شخص اپنی بیوی کو ہر دعوت میں جانے کی اور اپنے گھوڑے کو ہر جگہ پانی پینے کی اجازت دیتا ہے اس کی نہ تو بیوی ٹھیک رہے گی نہ گھوڑا ہی شرابی نہ راز پنہاں رکھ سکتا ہے اور نہ وعدہ ایفا کرتا ہے عقلمند دوسروں کی غلطیوں سے سیکھتے ہیں اور بیوقوف اپنی غلطیوں سے عورت اور شراب انسان کے ہوش و حواس گم کر دیتی ہے باتیں عورتوں کا حِصہ ہے اور کام مردوں کا پتلا اور لمبا شراب کا گلاس اتفاق اور اختلافِ راۓ ہی سب جھگڑوں کی جڑ ہے چپڑی اور دو دو تم مجھے چائے کے ساتھ پسند کرتے ہو میں آٹے چینی اور پھلوں سے بنا ہوں بتائو میں کیا ہوں گوشت نو عمر جانور کا اور مچھلی عمر رسیدہ لذت دیتی ہے آپ کا نوکر اور اُدھار کھاۓ بوڑھے اور جوان کی سدا لڑائی گرم جوشی مانند آگ ہے اِسے برقرار رکھو کہ بڑے کام کی چیز ہے اور اسے حدِ مناسب سے متجاوز نہ ہونے دو کہ اس میں خطرہ چھپا ہے گرم جوشی ہو اور نیکی سے وابستہ ہو تو خطرہ عظیم ثابت ہو سکتی ہے اپنا اپنا غیر غیرخون خون ہی ہے اور پانی پانی امیر اور غریب اوپر نیچے ہر طرف خواجہ کا گواہ مینڈک شیخی باز اور جھوٹا آپس میں بھائی بھائی ہیں انسان کی بہترین دولت یہی دو چیزیں ہیں وفا شعار بیوی اور تندرستی اپنا اپنا غیر غیر خون خون ہی ہے اور پانی پانی سلیفے یار کس کے دم لگایا اور کھسکے اپنے گُناہ قرض عمر اور دُشمن ہمیشہ تھوڑے معلوم ہوتے ہیں جو بیس سال کی عمر میں خوشرو تیس سال کی عمر میں توانا چالیس سال کی عمر میں امیر پچاس سال کی عمر میں عقلمند نہیں ہے وہ شخص کبھی خوبصورت طاقتور دولتمند اور دانا نہیں ہو سکتا تاریخ کیا ہے جرم اور بد قسمتی کا مرقع اگر طبیب بھی جواب دے دیں تو بشاش دل آرام اور غذا میں اعتدال یہ تین چیزیں تمہیں اچھا کر دیں گی عشق میں خرابیاں ہیں عزت کا پاس نہ ہونا شکوک عداوتیں صلح لڑائی اور پھر چین انصاف سےکیا مُراد ہے ہر شخص کو اس کا جائز حق دینے کی مضبوط اور متواتر خواہش مُقدمہ بازی میں دولت آرام چین اور دوست سے ہاتھ دھونے پڑتے ہیں پرانی لکڑی پرانے دوست پرانی شراب اور پرانے مصنف سب سے اچھے جواء عورت اور شراب انسان کو ہنستے کھیلتے ہی تباہ کر دیتے ہیں سور عورتیں اور مکھیاں جیسی ہوں گی ویسی ہی رہیں گی سلفے یار کس کے دم لگایا اور کھسکے بیل کے سامنے گدھے کے پیچھے سے اور فقیر کے پاس سے خبردار ہو کر نکلنا چاہیئے لوہا سب سے کار آمد دھات گیہوں سب سے اچھا اناج اور انسان سب سے بُرا جاندار ہے غذا آرام اور مسرت بہترین طبیب ہیں بہترین خوشبو کھانے کی بہترین ذائقہ نمک کا اور بہترین محبت بچوں کی ہے دُنیا میں سب سے پہلے مالی ہالی اور چرواہا تھے دُنیا میں صرف دو قسم کے لوگ ہیں امیر اور غریب دنیا میں تین راہیں ہیں دار العلوم رستہ علم و فضل کا سمندر رستہ نجات و دولت کا مقدمہ بازی رستہ خواری اور تباہی کا دولت عقل اور دیانتداری ہمیشہ اصلیت سے زیادہ لگتے ہیں دھواں بارش اور بُری بیوی یہ تین چیزیں آدمی کو باہر نکلنے پر مجبور کرتی ہیں فتح قابلِ عزت ظلم بُرا اور عفو کارِ خوب ہے مارنا قتل کرنا اور ظالمانہ طریقے سے چلا دینا ہم رتبہ سے لڑائی مشتبہ اپنے سے بڑے کے ساتھ پاگل پن اور کم رتبہ کے ساتھ سفلہ پن ہے لڑائی شکار اور قانون میں جتنا لطف ہے اتنی ہی مصیبت بھی آگ پانی اور سپاہی جلد ہی اپنے لیے راہ بنا لیتے ہیں سچائی سادگی اور صاف دلی یہ سب انسانی فطرت کے عین مطابق و موافق ہیں جوان اُمید پر اور بوڑھے گزرے ہوۓ دنوں کی یاد پر جیتے ہیں خوشامدی کی ہر جگہ آوبھگت اور کھرے کو ٹھوکریں نصیب ہوتی ہیں بہت کھلے دل سے اور زوروشور کے ساتھ داد دنیا گرم جوشی ہو مگر بے سمجھی کا رنگ لئے ہوۓ تو وہ بمنزلہ آگ کے ہے جو دھواں دیتی ہے اور روشنی سے خارج ہے دنیا میں تین راہیں ہیںدار العلوم رستہ علم و فضل کا سمندر رستہ نجات و دولت کا مقدمہ بازی رستہ خواری اور تباہی کا جاگیر دارانہ حق عورت کو قبضہ میں اور مرد کو قتل کرنا تمسخر اور دانشوری ان دونوں کا ساتھ شاذونادر ہی ہوتا ہے

Frequently Asked Questions (FAQ)

What is آتی ہے ہاتھی کے پیر اور جاتی ہے چیونٹی کے پیرجیسے کسی بیماری کا وقت جو آتا تو ایکدم ہے لیکن جاتا دیر سے ہےجیسے مشکل وقتیا کوئی تکلیف meaning in English?